پیر 26 اگست کا سیربین

پیر 26 اگست کو نشر ہونے والے بی بی سی اردو سروس کے ٹی وی پروگرام سیربین کے چاروں حصے آپ اس صفحے پر دیکھ سکتے ہیں۔

سیربین ہفتے میں تین دن یعنی پیر، بدھ اور جمعے کو بی بی سی اردو ڈاٹ کام پر لائیو نشر کیا جاتا ہے۔ یہ پروگرام ایکسپریس نیوز پر بھی نشر کیا گیا تھا۔

حامد کرزئی کے دورۂ پاکستان میں توسیع

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

افغان صدر حامد کرزئي جو پاکستان کے دورے پر ہیں نے امید ظاہر کی ہے کہ پاکستان طالبان کے ساتھ مزاکرات میں افغانستان کی مدد کرے گا۔ افغان صدر نے اپنے ایک روزہ دورۂ پاکستان میں ایک مزید دن کی توسیع کی ہے۔ اطلاعات کے مطابق افغان صدر نے پاکستان کي جانب سے طالبان کے ساتھ مزاکرات ميں مدد کي يقين دہاني کے بعد ہي پاکستاني دورے کي حامي بھري تھي۔ کرزئي حکومت پاکستان سے مُلا بِرادر سميت اہم طالبان رہنماؤں کي رہائي کا مطالبہ بھي کر رہي ہے۔

دیکھیے اسلام آباد سے ارم عباسی کی رپورٹ

اسي موضوع پر مزيد بات کرنے کے ليے لندن سٹوڈيو ميں موجود تھے بي بي سي پشتو سروس کے ايمل پسرلئي اور اسلام آباد سے شامل تھے صحافي اور تجزيہ کار طاہر خان۔

عالمی خبریں، ہسپانوی امریکیوں میں اسلام

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

اس حصے میں شامل کی گئیں عالمی خبریں جن میں سرفہرست تھی خبر شام سے جہاں اقوامِ متحدہ کے معائنہ کاروں نے پیر کو مبینہ کیمیائی حملے کا جائزہ لینے کے لیے دمشق کے قریبی علاقے کا دورہ کیا لیکن ان کی پہلی کوشش اس وقت ناکام رہی جب اس قافلے پر فائرنگ کي گئي۔

دوسری جانب برطانیہ اور دیگر مغربی ممالک نے کيميائي حملے شامی حکومت کو ذمہ دار ٹہراتے ہوئے کارروائی کرنے کا مطالبہ کیا ہے جبکہ روسی حکومت کا کہنا ہے کہ اقوامِ متحدہ کے مینڈیٹ کے بغیر شام میں کسی بھی قسم کی فوجی مداخلت بین الاقوامی قوانین کی سخت خلاف ورزی ہو گی۔ تفصیل کے ساتھ ثناء گلزار سے۔

اس کے بعد دیکھیے کہ امریکہ میں پچاس ملین ہسپانوی رہتے ہیں جن کی ایک بڑی تعداد اسلام قبول کر رہی ہے۔ بی بی سی کی کیٹی واٹسن نیو جرسی کے محلے یونین سٹی گئیں جہاں اسی فی صد ہسپانوی رہتے ہیں اور وہاں انہوں نے حال ہی میں اسلام قبول کرنے والے ہسپانویوں سے ملاقات کی۔

کراچی سے بلوچ لاشوں کی برآمدگی

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

بلوچستان سے سیاسی کارکنوں کی جبری گمشدگیاں اور مسخ شدہ لاشوں کی برآمدگی کوئی نئي خبر نہیں لیکن اب یہ سلسلہ کراچی میں بھي شروع ہوگیا ہے۔ انسانی حقوق کمیشن کا کہنا ہے کہ سپریم کورٹ کی نظر بلوچستان پر ہے اس لیے کارروائيوں کا رُخ کراچی کی طرف کیا گيا ہے۔ تاہم بلوچ تنظیمیں کہتي ہیں کہ کراچی کے بلوچوں کو خوفزدہ کرنے کے لیے یہ سلسلہ شروع کیا گیا ہے۔

دیکھیے کراچی سے ریاض سہیل کی رپورٹ۔

اسي بارے ميں بلوچ رہنما سينيٹر حاصل بزِنجو سے کی گئی گفتگو پروگرام میں شامل کی گئی۔

بزنس

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

ہر پیر کو سیربین میں شامل ہوتا ہے بِزنس سيگمينٹ۔

بھارت میں پیاز کی قلت حکومت کے لیے ایک بڑا دردِ سر بن گئی ہے۔ ملک کی کئی ریاستوں میں اسمبلیوں کے انتخابات ہونے والے ہیں اور ایسے میں آسمان کو چھوتی ہوئی پیاز کی قمیت ایک اہم انتخابی موضوع بنتی جا رہی ہے۔ صورتحال پر قابو پانے کے لیے حکومت ایران، مصر، چین اور پاکستان سے پیاز درآمد کرنے کی تیاری میں ہے۔

تو پیاز کس طرح سے لوگوں کے دل و دماغ پر چھائي ہوئي ہے؟ دیکھیے دہلی سے سہیل حلیم کی رپورٹ

اسی بارے میں