جمعہ 6 ستمبر کا سیربین

جمعہ 6 ستمبر کو نشر ہونے والے بی بی سی اردو سروس کے ٹی وی پروگرام سیربین کے چاروں حصے آپ اس صفحے پر دیکھ سکتے ہیں۔

سیربین ہفتے میں تین دن یعنی پیر، بدھ اور جمعے کو بی بی سی اردو ڈاٹ کام پر لائیو نشر کیا جاتا ہے۔ یہ پروگرام ایکسپریس نیوز پر بھی نشر کیا گیا۔

آصف زرداری کے مقدمات کا کیا ہو گا؟

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

آصف علی زرداری کے بطور صدرِ پاکستان عہدے کی معیاد ختم ہو رہی ہے۔ اِس کے ساتھ ہی ملک میں یہ چہ مگوئیاں شروع ہو گئی ہیں کہ وہ اِس آئینی عہدے سے سُبکدوش ہونے کے بعد اپنے مقدمات کا سامنا کرنے کي بجائے بیرون ملک چلے جائيں گے اور وہیں سے پارٹی کے امور چلائیں گے۔ آصف علی زرداری کے خلاف بدعنوانی کے چار مقدمات زیر سماعت ہیں تاہم وہ صدارتی استثنی کی وجہ سے گُزشتہ پانچ سال سے عدالتوں میں پیش نہیں ہوئے۔ اسلام آباد سے شہزاد ملک۔

اسي بارے میں، میں نے بات کي لندن ميں بي بي سي اردو کے ثقلين امام اور اسلام آباد ميں صحافي اور تجزيہ کار عامر متين سے۔ سب سے پہلے ميں نے عامر متين سے پوچھا کہ پاکستان ميں پہلي بار ايک سويلين صدر نے اپني آئيني مدت پوري کي ہے۔ پاکستاني جمہوريت کے ليے يہ کيا معني رکھتا ہے؟

جی 20 کے سربراہی اجلاس میں شام پر اختلافات

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

دنیا کی سب سے بڑی 20 معیشتوں کے رہنماؤں کے سالانہ اجلاس میں عالمی معیشت اور ٹیکسوں جیسے مسائل پر بات ہونا تھی لیکن شام کے بارے ميں اختلافات اجلاس پر چھائے رہے۔

روسي صدر ولاديمير پيوٹن نے اجلاس ميں کہا کہ شام کے خلاف فوجي کارروائي سے مشرقِ وسطٰي غيرمستحکم ہوجائے گا۔

دوسري جانب امريکہ اور اجلاس کے دس دوسرے شريک ملکوں نے ايک مشترکہ بيان ميں شام کے خلاف بھرپور عالمي ردعمل پر زورديا ہے۔ عارف شمیم کی رپورٹ

سترہویں صدی میں مغل بادشاہ شاہ جہاں نے اپنی بیگم ممتاز محل کی یاد میں تاج محل تعمیر کرایا تھا

فن تعمیر کے اس بے مثال نمونے کو آج بھی لافانی محبت کی علامت مانا جاتا ہے۔ لوگ تاج محل دیکھنے آتے ہیں اور خود بہ خود شاہ جہاں اور ممتاز محل کی بے پناہ محبت کا ذکر ہوتا ہے۔

لیکن اب آگرہ سے صرف سو میل کے فاصلے پر ایک چھوٹے سے گاؤں میں ایک اور تاج محل تعمیر ہو رہا ہے۔ کون بنوا رہا ہے اسے اور کیوں؟ ديکھتے ہيں سہيل حليم کي رپورٹ۔

پاکستان میں رہائش ایک سنگین مسئلہ

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

پاکستان ميں رہائش يا ہاؤسنگ ايک سنگين مسئلہ بنتا جارہا ہے اور پورے ملک ميں اسي لاکھ مکانوں کي کمي ہے۔ پچھلے دورِ حکومت ميں پنجاب حکومت نے آشیانہ کے نام سے ایک سستی ہاؤسنگ سکیم متعارف کروائی تھی۔ اب نئی حکومت نے پورے ملک میں اس منصوبے کو شروع کرنے کے لیے بجٹ میں رقم مختص کی ہے۔ کیا حکومت کی منصوبہ سازی سے رہائش کا مسئلہ حل ہو پائے گا؟

لاہور سے صباء اعتزاز کی رپورٹ

اسي مسئلے پر ميں نے بات کي وفاقي وزير برائے ہاؤسنگ عثمان ابراہيم سے اور ان سے پوچھا کہ رہائش کا مسئلہ جتنا سنگین ہوتا جا رہا ہے اتنا ہی معاشرے میں جرائم سر اٹھا رہے ہیں اور آج جتنے بھی جرائم ہو رہے ہیں زیادہ تر کے تانے بانے کچی آبادیوں سے ملتے ہیں۔ يہ مسئلہ کتنا بڑا ہے؟۔

میرا شہر

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

سمندر کے پانی اور سرسبز پہاڑوں سے گھرے ہوئے شہر کيپ ٹاؤن ميں نسلي تفريق کي پاليسي نے ايک عرصے يہاں لوگوں کو منقسم رکھا۔ ليکن آج ہر رنگ ونسل سے تعلق رکھنے والے لوگ يہاں رہتے ہيں اور اس شہر کي خوبصورتي کو چار چاند لگا ديتے ہيں۔ آج ہمارے ہفتہ وار سلسلے 'ميرا شہر' میں بي بي سي کے نامہ نگار مو ايلي آپ کو کيپ ٹاؤن کی سیر کرا رہے ہيں۔

اسی بارے میں