پیر 23 ستمبر کا سیربین

پیر 23 ستمبر کو نشر ہونے والے بی بی سی اردو سروس کے ٹی وی پروگرام سیربین کے چاروں حصے آپ اس صفحے پر دیکھ سکتے ہیں۔

سیربین ہفتے میں تین دن یعنی پیر، بدھ اور جمعے کو بی بی سی اردو ڈاٹ کام پر لائیو نشر کیا جاتا ہے۔ یہ پروگرام ایکسپریس نیوز پر بھی نشر کیا گیا تھا۔

پشاور چرچ حملہ، پاکستان بھر میں احتجاج

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

پاکستان کے صوبۂ خيبر پختون خوا میں عيسائي اقليت پر اتوار کو شدت پسندوں کے حملے نے پورے پاکستان کو ہلا کر رکھ ديا جس کے نتیجے میں اکیاسی افراد ہلاک ہوئے۔ عيسائي برادري سے تعلق رکھنے والے افراد نے ملک کے تمام بڑے شہروں میں مظاہرے کیے ہیں۔

دیکھیے پشاور سے عزيز اللہ خان کي رپورٹ

پاکستان میں تحریک انصاف کے خواتین ونگ کی سربراہ اور رکنِ قومی اسمبلی منزہ حسن کا کہنا ہے کہ پشاورمیں چرچ پر حملے نے حکومت اورطالبان کے درميان مذاکرات کو مشکل بنا دیا ہے۔ اسلام آباد میں نامہ نگارمحمود جان بابرنے اُن سے خصوصی گفتگو میں پوچھا کہ جب یہ حملہ ہوا توتحریک انصاف کی قیادت اورحکومت دونوں ہي نظرکیوں نہیں آئیں؟

عالمی خبریں، نیروبی میں شاپنگ سینٹر پر حملہ

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

گزشتہ تین دنوں سے کينيا کے شہر نيروبي ميں جس شاپنگ سنٹر ميں اسلامي شدت پسندوں نے قبضہ کر رکھا تھا کينيا کے حکام کے مطابق اس کا کنٹرول سرکاري دستوں نے حاصل کرليا ہے۔ سنيچر کي دوپہر صوماليہ ميں قائم شدت پسند تنظيم الشباب کے مسلح حملہ آوروں نے نيروبي کے مرکز ميں قائم شاپنگ سينٹر ميں گھس کر انہتر افراد کو قتل کرديا تھا۔ کينيا کے وزير داخلہ کے مطابق سکيورٹي دستوں کي کارروائي ميں متعدد شدت پسند ہلاک اور زخمي ہوئے ہيں۔ تاہم يہ ابھي واضح نہيں کہ بقيہ يرغماليوں کا کيا ہوا۔

تفصيلات کے ساتھ خالد کرامت

نیروبی سے تازہ ترين حالات جاننے کے ليے پروگرام میں نيروبي ميں مقيم حبيب بينک اے جي زيورک کے سينيئر وائس پريزيڈنٹ محمد عارف انصاري سے کی گئی خصوصی گفتگو بھی شامل تھی۔

لیڈی ریڈنگ ہسپتال پشاور میں سہولیات کا فقدان کیوں؟

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

خیبر پختونخواہ کا سب سے بڑا ہسپتال لیڈی ریڈنگ گزشتہ تقريبا تین دہائیوں سے جنگ اور دھماکوں کے زخمیوں کو محدود وسائل کے ساتھ طبی سہولیات فراہم کرتا رہا ہے۔ صوبے کے اِس سب سے بڑے ہسپتال ميں جو جديد طبي سہوليات ہوني چاہييں وہ نہيں ہيں ۔ کہا جا رہا ہے کہ اگر اس ہسپتال ميں جديد سہوليات ہوتيں تو کئي زحميوں کو ہلاکت سے بچايا جا سکتا ہے۔

دیکھیے پشاور سے نامہ نگار رفعت اللہ اورکزئی کی رپورٹ۔

الشباب کیا چاہتے ہیں؟

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

صوماليہ ميں سرگرم شدت پسند گروہ الشباب نے کينيا کے دارالحکومت نيروبی کے شاپنگ مال پر حملے سے بہت پہلے وہاں کے عوامي مقامات پر حملوں کی دھمکی دی تھی۔ کینیا نے شدت پسندوں کے خلاف لڑائی میں صومالیہ کی فوج کی مدد کے لیے اپنے چار ہزار فوجی موگادیشو بھیجے تھے۔ الشباب گروہ کیا ہے اور کینیا پر حملے سے کیا حاصل کرنا چاہتا ہے؟

دیکھیے اس بارے میں عارف شمیم کی رپورٹ۔

کینیا پر حملے کی گونج پورے خطے میں محسوس کی جا رہی ہے اور دنیا کے بہت سے ممالک اس سے متاثر ہوئے ہیں۔ اس سلسلے میں بی بی سی سواحلی سروس کے یوسف ڈایو سے کی گئی گفتگو اس حصے میں شامل ہے۔

اسی بارے میں