اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

بدھ 25 ستمبر کا سیربین، حصۂ اول

پاکستان میں منگل کی سہ پہرآنے والے زلزلے نے بلوچستان کے آواران، کیچ، تربت اور خضدارسمیت بڑے علاقے میں تباہی مچائی ہے جس کے نتیجے میں تين سو سے زیادہ افراد ہلاک جبکہ کئی سو کے زخمی ہونے کی تصدیق ہوئی ہے۔ امدادی اداروں کا کہنا ہے کہ وقت گذرنے کے ساتھ نقصان میں اضافے کا اندیشہ ہے۔ زلزلے نے کراچی اورانڈيا کے شہر دہلی سميت وسيع علاقے کوہلا کررکھ دیا تھا۔

دیکھیے اسلام آباد سے نامہ نگارمحمود جان بابرکی رپورٹ۔

پاکستان ميں بي بي سي کے پارٹنر ٹيليويژن چينل ايکسپريس نيوز کے نامہ نگار محمد اسلم خان زلزلے سے متاثرہ علاقوں ميں سب سے پہلے پہنچنے والے صحافيوں ميں سے ايک تھے۔ انہوں نے تباہي کي آنکھوں ديکھي تفصيلات بي بي سي کو بتائيں۔

اسی طرح نامہ نگار محمود جان بابر کی اسلام آباد میں این ڈی ایم اے کے ممبرآپریشن بریگیڈیئرکامران ضیا سے گفتگو پروگرام کے اس حصے میں شامل ہے۔

بي بي سي کے نامہ نگار شاہ زيب جيلاني چند ماہ پہلے بلوچستان کے علاقے ماشکیل میں آنے والے زلزلے کے دوران اس دوردراز علاقے ميں گئے تھے اور امدادي کارروائي کے دوران پيش آنے والي مشکلات کو بھي ديکھا تھا۔

آواران اور آس پاس کے اضلاع کے بارے ميں ان سے کی گئی گفتگو اس حصے میں شامل ہے۔