پیر سات اکتوبر کا سیربین

پیر سات اکتوبر کو نشر ہونے والے بی بی سی اردو سروس کے ٹی وی پروگرام سیربین کے چاروں حصے آپ اس صفحے پر دیکھ سکتے ہیں۔

سیربین ہفتے میں تین دن یعنی پیر، بدھ اور جمعے کو بی بی سی اردو ڈاٹ کام پر لائیو نشر کیا جاتا ہے۔ یہ پروگرام ایکسپریس نیوز پر بھی نشر کیا گیا تھا۔

آج ملالہ کی پہچان تعليم نسواں کی علبمردار کے طور پر

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

ملالہ يوسف زئي پر طالبان کے قاتلانہ حملے کو ايک برس بيتا۔ملالہ کا قصور صرف يہ تھا کہ انہوں نے لڑکيوں کي تعليم کے ليے صدا بلند کي۔ ملالہ اس حملے ميں بال بال بچیں اور اب وہ برطانيہ کے شہر برمنگھم رہتی ہیں اور وہیں کے ايک سکول ميں زير تعليم ہیں۔ آج ملالہ کي پہچان تعليم نسواں کي علبمردار کے طور پر ہے۔ سولہ سال کي عمر میں انہیں اقوام متحدہ کي جنرل اسمبلي سے خطاب کا اعزاز حاصل ہوا۔ ملالہ نے بی بی سی کي ميشيل حسين سے گفتگو کي، مستقبل پر نظر رکھي اور حملے والے دن کو ياد کيا۔

بي بي سي کي پرزنٹر ميشل حسين نے ملالہ سے پوچھا کہ حملے کے بعد سب سے پہلي چيز آپ کو کيا ياد ہے؟

تو ملالہ کہتی ہیں کہ وہ پاکستان با اختيار ہو کر جائیں گي۔ ليکن سوال يہ ہے کہ کب اور کيسے؟ میں نے کامن ويلتھ سول سوسائٹی ايسوسي ايشن میں ايشيا کي نمائندہ فريال گوہر سے اب سے کچھ دير پہلے بات کي اور پوچھا کہ ملالہ کے پاکستان جانے کے ليے ماحول ساز گار ہے۔

پولیو ٹیم پر حملہ اور عالمی ثقافتی ورثہ زبوں حالی کا شکار

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

پشاور کے ايک مضافاتی طبی مرکز پر ہونے والے حملے میں ايک پوليس اہلکار سميت دو افراد مارے گئے اور گیارہ رضا کار زخمی ہوئے۔ پوليس کا کہنا ہے کہ يہ دھماکہ اس وقت ہوا جب مرکز میں بچوں کو پوليو کي دوا پلائی جا رہی تھي۔ پشاور سے عزيز اللہ خان کي رپورٹ

بحیرہ روم کے ساحل پر واقع الجزائر میں قصبہ کا علاقہ اپنے قلعوں، مسجدوں اور سلطنتِ عثمانیہ کی طرز پر بنائے گئے محلات کی وجہ سے مشہور ہے۔ ليکن شورش اور قدرتی آفات کے سبب عالمي ثقافتی ورثہ قرار ديا گيا يہ شہر اب زبوں حالی کا شکار ہے۔ اب ایک سرکاري منصوبے کے تحت اس قدیم ورثے کي نشاطِ ثانيہ کا وقت آيا ہے۔ تفصیل کے ساتھ ثناء گلزار۔

خیبر پختونخوا میں نیا بلدیاتی نظام

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

پاکستان کے صوبہ خیبر پختونخوا کی حکومت نے صوبے میں نئے بلدیاتی نظام کے نفاذ کی منظوری دے دی ہے۔ حکومت کا دعویٰ ہے کہ نیا نظام نہ صرف موثر ہے بلکہ اس سے عوامی مسائل فوری طور پر ہوں گے۔ ليکن کيا واقعی ايسا ممکن ہے؟ اور يہ نيا نظام کسي بھي پرانے نظام سے کس قدر مختلف ہے؟ پشاور سے نامہ نگار رفعت اللہ اورکزئي نے اسی کا جائزہ ليا ہے۔

صوبۂ خيبر پختونخوا میں نئے بلدياتی نظام کے بارے ميں نامہ نگار رفعت اللہ اورکزئی نے صوبے کے وزيرِ بلديات عنايت اللہ خان سے بات کی اور پوچھا کہ اِس نظام کو کیوں ایک انقلابی تبدیلی سمجھا جائے۔

بھارتی طالب علموں کی پریشانی اور اسلام آباد میں فیشن ویک

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

گزشتہ دنوں امريکي ڈالر کے مقابلے میں بھارتی روپے کي قدر میں جس طرح کمی آئی ہے اس سے حکومت، بڑي کمپنياں اور صارفین کے ساتھ ساتھ عوام بھي پريشان ہے۔ ہمارے نامہ نگار برجيش اوپادھيائے نے امريکہ میں زير تعليم بعض بھارتی طالب علموں سے بات کی اور يہ جاننے کي کوشش کي روپے کي کم ہوتی قدر نے انہیں کيسا پريشان کيا۔

پاکستان میں فیشن کی طرف کھچے آنے والوں کي تعداد دن بدن بڑھ رہی ہے۔ اسلام آباد میں اس کا زندہ ثبوت، فیشن ویک میں دکھائی ديا، بڑی تعداد میں لوگ آئے۔ فيشن کے اس بڑھتے رجحان کے باوجود ماہرین کو شکوہ ہے کہ فیشن انڈسڑی کے ليے سرکاري امدادا و مراعات نہ ہونے کے سبب پاکستانی ٹیکسٹائل کی برآمدات میں خاطر خواہ اضافہ نہیں ہو رہا۔ اسلام آباد سے ارم عباسی

اسی بارے میں