اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

اسلامی نظریاتی کونسل کتنی کامیاب؟

اسلامي نظرياتي کونسل کي يکے بعد ديگرے منظر عام پر آنے والي سفارشات پر پاکستان ميں متعدد حلقوں نے کڑي تنقيد کي۔ ناقدين کا کہنا تھا کہ کونسل کي سفارشات بعض اوقات ملکي قوانين اور انساني حقوق سے متصادم ہوتي ہيں۔ بعض لوگوں کا کہنا ہے کہ ملک ميں پارليمان اور سپريم کورٹ کي موجودگي ميں اسلامي نظرياتي کونسل کي ضرورت باقي نہيں رہتي۔ اسلامی نظریاتی کونسل کے قيام کو کئی دہائیاں گزر گئی ہیں۔ اس کا بنیادی مقصد اس بات کا جائزہ لینا تھا کہ کیا پاکستان کے قوانین اسلام کے منافی ہیں یا نہیں۔

کیا کونسل اپنی آئينی ذمہ داریاں پوری کررہي ہے؟ نامہ نگار عنبر شمسی کی رپورٹ