اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

حامد مير پر حملے کے بعد ميڈيا منقسم

پاکستان کے ايک سينيئر صحافي اور جيو چينل کے اينکر پرسن حامد مير پر ہونے والے حملے کے بعد کيا ہونا چاہيے تھا؟

اميد تو يہ تھي کہ اس حملے سے آزادي اظہار پر دباؤ کے بارے میں ايک ملک گير بحث چھڑتی۔ ليکن اس کے برعکس، کيا تجزيے اور کيا تبصرے ہر طرح کي گفتگو کا رُخ سازشوں کي جانب مڑ گيا ہے۔ کچھ عرصہ قبل افغانستان کے ايک معروف صحافي سردار احمد کو جب قتل کيا گيا تو وہاں صحافيوں اور ميڈيا اداروں نے اپني صفوں کو مضبوط رکھا۔ پاکستان میں ايسا کيوں ممکن نہیں؟ عامر احمد خان کی رپورٹ