اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

’مرد شرمندہ نہیں ہوتے‘

پاکستان میں ہزاروں خواتین نے جنسی طور پر حراساں کيے جانے کے واقعات کي شکايات درج کرائي ہيں۔جمعے کو ليہ ميں ايک بيس سالہ عورت کو ريپ کے بعد قتل کیے جانے کا واقعہ بھي سامنے آيا ہے۔ خواتين کے ساتھ بدسلوکي ایک ایسا مسئلہ ہے جو عموماً پاکستاني معاشرے ميں کم ہي موضوع بحث بنتا ہے۔

سنہ 2010 میں خواتین کے تحفظ کے لیے قانون بننے کے بعد سے اب تک تین ہزار سے زيادہ شکایات کي سماعت ہو چکی ہے۔ ان میں سے وفاقی محتسب نے 173 پر باقاعدہ قانونی کارروائی کی اور18 مقدمات میں سزائیں سنائیں۔ وفاقی محتسب کے بقول ایسے کیسز میں سے تقریباً 80 فیصد کا تعلق سرکاری دفاتر سے ہے۔ تفصيل کے ساتھ عنبر شمسی۔