دم دار ستارے پر پہلی بار اترنے کی کوشش
اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

دمدار ستارے پر پہلی بار اترنے کی کوشش

اِسے خلا نوردي کي تاريخ ميں ایک ایسا ہی تاريخ ساز لمحہ قرار دیا جا رہا ہے کہ جب نیل آمسٹرونگ نے پہلی مرتبہ چاند پر قدم رکھا تھا۔ آج زمین سے پچاس کروڑ کلومیٹر دور ایک سپیس کرافٹ چالیس ہزار میل فی گھنٹہ کی رفتار سے سفر کرنے والے ايک دُمدار ستارے پر لینڈ کرنے کی کوشش کرے گا۔

اگر دس سال پہلے روانہ کیا جانے والا روزیٹا مشن اِس دُمدار ستارے پر اترنے میں کامیاب ہوگیا تو اِس سے نظامِ شمسی کے وجود میں آنے اور زمین پر پائے جانے والے پانی جیسے رازوں کا پتہ لگایا جا سکے گا۔ ڈيوڈ شُکمين کي رپورٹ پيش کر رہے ہیں ضیاد طفر۔