پاکستانی میڈیا
اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

’میڈیا کو دہشتگردی کی خبریں دیتے وقت احتیاط کرنی چاہیے‘

پاکستان ميں شدت پسندي کا مقابلہ کرنے کے اقدامات پر اتفاق رائے پيدا کرنے کے ليے ملک کي سياسي اور فوجي قيادت کا اجلاس جاري ہے۔ پشاور ميں آرمي پبلک سکول پر طالبان کے حملے کے بعد، ملک ميں شدت پسندوں کے خالاف متعدِد اقدامات کے حق ميں بحث ہو رہي ہے۔

وزیرداخلہ چوہدری نثار نے ذرائع ابلاغ کی حکمت عملی پر بھی کئی سوال اٹھائے اور یاد دلایا کہ میڈیا کو شدت پسند تنظیموں کے مؤقف کی تشہیر کرنے کی اجازت نہیں دی جاسکتی۔ لیکن جنگ کی سی کفیت میں صحافیوں کے لیے ذمےداری اور غیرجانبداری میں توازن پیدا کرنا کس حد تک ممکن ہے ؟ اور ماضی میں بین الاقوامی صحافتی ادارے اس طرح کی صورتحال سے کس طرح نمٹتے رہے ہیں۔

لاہور سے شمائلہ جعفری کی رپورٹ