بچوں کو جنگ سے دور رکھیں
اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

حملے سے متاثرہ بچوں کا خیال کیسے رکھیں

پاکستان ميں آرمي پبلک سکول پر حملے کے تقريباً دس روز بعد اگر ايک طرف حکومت نے فوجي افسران کي سربراہي ميں عدالتوں کے قيام اور نئےِ قوانين سميت کئي اہم اقدامات کا اعلان تو کيا مگر دوسري جانب اِس قتل عام کے متاثرين خصوصاً بچوں پر اس واقعے کے نفسياتي اثرات کي طرف کم ہي توجہ دي جارہي ہے، حالانکہ اِن بچوں اور خاندانوں کي بحالي بھي کم اہم نہيں۔ ہماري نامہ نگار صبا اعتزاز پشاور ميں اس حملے سےمتاثر ہونے والے بچوں سے مليں۔ آئيے ديکھتے ہيں ان مصوم جانوں پر کيا بيت رہي ہے۔