افغانستان میں ایک مارکیٹ
اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

امیر افغانوں کی اپنے ملک میں سرمایہ کاری

عہدہ صدارت سنبھالنے کے بعد سے ہي افغان صدر اشرف غنی یہ کہتے رہے ہيں کہ افغانستان کو ’کاروبار دوست‘ ملک بنا دینا چاہیے۔ لیکن ملک کی معیشت بہتر نہيں نتيجتہً عدم استحکام برقرار ہے۔ ایک افغان بینک نے تو يہاں تک خبردار کیا ہے کہ ملک میں براہ راست سرمایہ کاری کرنے والوں کو ايسا کرنے میں کم از کم دس سال لگ سکتے ہیں۔ لیکن اب بعض انتہائی امیر افغان شہریوں نے افغانستان ميں ہي سرمايا کاري کرنے کا بيڑا اُٹھايا ہے۔ ثناء صافی کی رپورٹ نصرت جہاں کي زباني