اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

افغانستان میں عورتوں کے حقوق

افغانستان کو خواتین کے لیے دنیا کا خطرناک ترین ملک کہا جاتا ہے۔ انسانی حقوق کے لیے کام کرنے والي تنظیموں کا کہنا ہے کہ تقریباً ساٹھ فیصد افغان لڑکیوں کی سولہ سال کی عمر تک شادی کر دی جاتی ہے۔ اِن میں سے زیادہ تر شادیاں جبری طور پر یا پھر والدین کی مرضی سے ہوتی ہیں۔ مغربی طاقتوں کے افغانستان سے انخلا کے بعد اب بہت سے لوگوں کا خیال ہے کہ خواتین کے حقوق کے حوالے سے ہونے والی ترقی کو خطرات کا سامنا ہے۔ ہرات سے شاہزيب جيلاني کي رپورٹ