اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

روہنجیا مظلوم مگر ’ہم ہزارہ کے قتل پر خاموش کیوں؟‘

پاکستان کے وزیر اعظم نواز شریف نے ایک خصوصی کمیٹی تشکیل دی ہے جو برما سے نکالے جانے والے روہنجیا مسلمانوں کی حالتِ زار کا جائزہ لے کر حکومت کو سفارشات پیش کرے گی کہ پاکستان ان مظلوم افراد کی فوری امداد کے لیے کیا اقدامات اٹھا سکتا ہے۔

معروف تـجزیہ کار پرویز ہودبھائی کا کہنا ہے کہ برما کے روہنجیا مسلمانوں کے ساتھ روا رکھی جانے والے زیادتی نہیت افسوسناک امر ہے لیکن افسوس ہے کہ پاکستان نے ان کی مدد کا بیڑہ شاید اس وجہ سے اٹھایا ہے کہ وہ مسلمان ہیں، نہ کہ محض انسانی بنیادوں پر۔

پرویز ہود بھائی نے ان خیالات کا اظہار بی بی سی اردو کی شمائلہ خان سے بات کرتے ہوئے کیا۔