افغان طالبان (فائل فوٹو)
اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

کيا مذاکرات طالبان کےموقف میں تبديلی کا اشارہ ہیں؟

افغان طالبان کا تین رکنی وفد آج سے ناروے ميں شروع ہونے والي دو روزہ کانفرنس میں حصہ لے رہا ہے۔ اِس وفد کی سربراہی قطر میں طالبان کے آفس کے ڈائریکٹر طیب آغا کر رہے ہیں۔ طالبان کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد کا کہنا تھا کہ وہ اِس موقعے کو اپني قوم کے جائز مطالبات کو دنیا تک پہنچانے کا ذريعہ سمجھتے ہیں۔

لیکن اُنہوں نے کابل انتظامیہ سے براہ راست مذاکرات سے انکار کیا۔ افغانستان ميں جہاں ایک طرف طالبان کی پُرتشدد کارروائیوں میں اضافہ ہوا ہے وہيں دوسری جانب اب بات چیت ميں بھي اُن کي دلچسپي دکھائي دے رہي ہے۔ کیا یہ طالبان کی سوچ یا موقِف میں کسی بڑی تبدیلی کا اشارہ ہے؟ اسلام آباد سے ہارون رشید کی رپورٹ۔