اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

ترک کردوں کي لاشيں حوالے کيوں نہيں کي جا رہي ہیں؟

ترکی میں پر تشدد واقعات کی حالیہ لہر کے بعد وہاں کی حکومت کا کہنا ہے کہ وہ بیک وقت دو دشمنوں کا سامنا کر رہی ہے۔ خود کو دولت اسلاميہ کہنے والي شدت پسند تنظيم کے علاوہ ترک فوج نے اب کرد جنگجو گروہ شام ميں ’پی کے کے‘ کے ٹھکانوں پر بھی فضائی بمباری کی مہم شروع کر دی ہے۔ معاملہ اس لیے اور بھی پیچیدہ ہے کیونکہ کرد جنگجو بھی دولت اسلاميہ کا مقابلہ کر رہے ہیں۔ تناؤ کے اس بڑھتے ہوئے ماحول میں ترکی نے اپنے سرحدی علاقوں میں سخت اقدامات کيے ہیں اور اب شام ميں ہلاک ہونے والے کرد جنگجوؤں کي لاشيں بھي ترکي نہيں آنے دي جا رہي۔ سلین گریت کی رپورٹ۔۔۔۔ پیش کر رہی ہیں قندیل شام۔