اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

ترقی کی علامت یا شہر کی ثقافت اور ورثے کو خطرے

لاہور میں عوامی ٹرانسپورٹ کے نئے منصوبے 27 کلومٹر لمبی آرنج لائن ٹرین پر کام شروع ہو گیا ہے، جس کا راستہ ایسے سات تاریخی مقامات سے گزرے گا۔ ان مقامات میں چوبرجی، گلابی باغ، جنرل پوسٹ آفس اور شالمار باغ شامل ہیں۔ اس منصوبے پر پریس میں واقع ادارائے تحفظِ ورثہ یعنی یونیسکو نے پنجاب حکومت کو خط کے ذریعے درخواست کی ہے کہ جب تک شالمار باغ کے قریب تعمیراتی کام کی تفصیل فراہم نہ کی جائے، تب تک کام رکا رہے۔ تاہم، حکومتِ پنجاب نے ابھی تک یونیسکو کو جواب نہیں دیا ہے۔

کیا آرنج لائن ٹرین لاہور کے لیے ترقی کی علامت ہے یا شہر کے ثقافت اور ورثے کو خطرے میں ڈال رہی ہے؟

عنبر شمسی نے جاننے کی کوشش کی۔