جرمنی
اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

کولون میں خواتین کےساتھ بدسلوکی کی تحقیقات

جرمنی میں ایک سینئیر اہلکارکا کہا ہے کہ نئے سال کی تقریبات کے دوران خواتین پر جو جنسی حملے ہوئے ہیں ان کے مدنظر پولیس کو اپنے طريقے کار پر از سر نوغور کرنے کی ضرورت ہے۔

متاثرہ خواتین کا کہنا ہے کہ ان کے ساتھ بدسلوکی کرنے والے عرب اور شمالی افریقی لگتے تھے۔اس سلسلے میں مبینہ طور پر ملوث 3 افراد کی شناخت کی گئی ہے ليکن ابھی تک کسی کو گرفتار نہیں کيا گيا ہے۔ حکومت کی پناہ گزینوں سے متعلق پالیسی کے مخالفین کا موقف ہے کہ اس پالیسی نے جرمن عوام کی زندگی خطرے میں ڈال دي ہے۔ جینی ہل کی رپورٹ خدیجہ عارف کي زبانی۔