اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

’پاکستان پرفارمنس پر توجہ دے، سیاست نہ کرے‘

بھارتی کرکٹ بورڈ بی سی سی آئی کے سیکیٹری جنرل انوراگ ٹھاکر نے بی بی سی سے خصوصی انٹروئیو میں کہا ہے کہ پاکستان اپنی ڈھیلی پرفارمنس پر دھیان دے نہ کہ سیاست کرنے پر۔

انھوں نے کہا کہ ’دنیا بھر کے لوگوں سے میں یہی کہنا چاہتا ہوں کہ یہاں 26 ٹیمیں حصہ لے رہی ہیں۔ اور بھارت صرف ایک ٹیم کے لیے نہیں بلکہ ان سب ٹیموں کو سیکیورٹی فراہم کرنے کے لیے عزم ہے۔ اور یہی میں پاکستان کرکٹ ٹیم اور پاکستان کرکٹ بورڈ سے کہنا چاہتا ہوں کہ جس طرع ہر ٹیم ہمارے لیے اہم ہے اسی طرع سے آپ کی بھی ہے۔ اس مدعے پر سیاست نہیں کی جانی چاہیے۔ جس طرع سے ہم نے تیاریاں کی ہیں، وہ ہر ٹیم کے لیے کی ہیں۔ اور کسی کو ٹورنامینٹ میں حصہ نہ لینے کے لیے کوئی بھی بہانہ نہیں ڈھونڈنا چاہیے۔ اور ابھی حال ہی میں جو ساؤتھ ایشین گیمز ہوئی تھیں ان میں پاکستان کے پانچ سو سے زائد ایتھلیٹ آئے تھے اور آپ دیکھیں کہ ان کو وہاں پر کتنی سیکیورٹی دی گی۔ تو اس بات کو زیادہ بڑھانہ نہیں چاہیے اور پاکستان کو کوشش کرنی چایہے کہ وہ ایشیا کپ میں اپنی ڈھیلی پرفارمنس پر دھیان دے نہ کہ سیاست کرنے پر۔ ‘

انھوں نے مزید کہا کہ ہر ریاست اپنی اپنی ٹیموں کے میچز کے لیے سیکیورٹی فرہام کرنے کی پابند ہے۔ اور وفاق نے صوبائی حکومتوں کو ہدایت دی ہے کہ پختہ تیاریاں کی جائیں جو کہ کی گئی ہیں۔ اور پاکستان کو فکر نہیں کرنی چاہیے۔

تصویر کے کاپی رائٹ a thakur
Image caption ’ہم جیسے لوگوں کے لیے تو زبان ہی کافی ہوتی ہے‘

جب ان سے پوچھا گیا کہ کیا آپ کو نہیں لگتا کہ پاکستان کی سیکیورٹی صورتحال دوسرے ملکوں سے مختلف ہے تو انھوں نے جواب میں کہا کہ’ ایسا آپ کو لگتا ہے لیکن ایسا ہے نہیں۔ اگر پاکستان کے پانچ سو کھلاڑی یہاں آ کر کھیل سکتے ہیں تو پندرہ کھلاڑی بھی کھیل سکتے ہیں۔‘

جب انوراگ ٹھاکر سے پوچھا گیا کہ کیا ان کی اس بات سے یہ سمجھا جائے کہ بھارت پاکستان کو اب تحریری ضمانت نہیں دے گا تو انھوں نے جواب میں کہا کہ’ دیکھیں ہم جیسے لوگوں کے لیے تو زبان ہی کافی ہوتی ہے۔ اور جب ایک ملک نے ورلڈکپ کے انعقاد کی حامی بھری ہے تو وہ ملک پوری طرع سے سیکیورٹی کا خیال رکھنے کی تیاری کرتا ہے‘۔