اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

’عدالتیں موجود ہیں تو جرگے کا کیا کام‘

ریپ اور خواتین کے ساتھ زیادتی کے خلاف سرگرم پاکستانی کارکن مختار مائی کا کہنا ہے کہ پاکستان میں اکثر جرگے سیاستدانوں اور مقامی اشرافیہ کے دباؤ میں ہوتے ہیں اور یہ جرگے انصاف کی راہ میں رکاوٹ ہیں۔

بی بی سی اردو کی عنبر خیری سے ایبٹ آباد میں جرگے کے حکم پر ایک طالبہ کے قتل کے مقدمے میں گرفتار ملزمان کو ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کرنے کے حوالے سے بات کرتے ہوئے مختار مائی نے کہا کہ ملک میں عدالتوں کے ہوتے ہوئے اس قسم کے مقامی جرگوں کی کوئی ضرورت نہیں۔