بغداد میں تشدد کی نئی لہر کے کیا معنی ہیں؟

بغداد میں تشدد کی نئی لہر کے کیا معنی ہیں؟

عراق کے دارالحکومت بغداد ميں بم دھماکوں کي حاليہ لہر نے ملک ميں سکيورٹی اور سياسی استحکام کے بارے ميں نئے سوالات کو جنم ديا ہے۔ اِن يکے بعد ديگرے بم دھماکوں کی ذمہ داری نام نہاد دولتِ اسلاميہ نے قبول کی ہے۔ صرف اِس مہينے ميں بغداد ميں کم از کم ايک سو تيرانوے لوگ ہلاک ہو چکے ہیں۔ دوسری جانب عراقی فورسز نے مقامی قبائل کي مدد سے رُطبہ نامی شہر کو دولتِ اسلاميہ سے چھڑا ليا ہے۔ رُطبہ عراق اور شام کی سرحد پر واقع ہے اور دفاعی لحاظ سے اہم ہے۔ تو بغداد ميں بم دھماکوں کی نئی لہر کی وجہ کيا دولتِ اسلاميہ کی کئی علاقوں سے پسپاہی ہے يا اُس کی حکمتِ عملی ميں تبديلی؟ تفصيل کے ساتھ کاشف قمر