اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

چينی آبدوز اُن گہرائيوں تک جائے گی جہاں کوئی نہيں جا سکا

ٹيکنالوجی کي دنيا ميں چين سب سے ايک قدم آگے رہنے کي کوشش کرتا رہا ہے۔ چاہے وہ روبوٹس ہوں يا خودکار ڈرون، چين نے اِس ميدان ميں تيزي سے ترقی کی ہے۔ ليکن اب، اُس کي نظر سمندر پر ہے۔ چيني سائنسدان ايک ايسي خودکار آبدوز بنا رہے ہيں جو کہ گيارہ ہزار ميٹر زيرِ آب جا سکے گی اور وہ بھي خالی نہيں بلکہ لوگوں کے ساتھ۔ ناقدين کا کہنا ہے کہ چين کا ايسا کرنا سمندري حدود پر اپني اجارہ داري مضبوط کرنے کی طرف ايک اور قدم ہے۔ تاہم چينی سائنسدان کہتے ہيں کہ يہ صرف تحقيقي مقاصد کے ليے ہے۔ تفصيل کے ساتھ عارف شميم۔