اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

باکسنگ چیمپیئن کا پاکستان سے شکوہ

جب کسی کامياب کھلاڑی کو خود اپنے ہي ملک میں پذيرائي اور سرپرستی نصيب نہ تو پھر وہ مایوس ہوکر دوسرے ملک کا رخ کرنے پر مجبور ہوجاتا ہے۔ پاکستاني کھیلوں کی تاریخ میں ایسی کئی مثالیں موجود ہیں اور ان میں اکثریت باکسرز کی ہے جو معاشی مشکلات سے جان چھڑانےاور بہتر مستقبل کی تلاش ميں پاکستان چھوڑنے پر مجبور ہوئے۔ باکسر محمد وسیم بھی انہی میں سے ہیں جنہوں نے امیچر باکسنگ میں پاکستان کے لیے کئی اہم کامیابیاں حاصل کیں اور گزشتہ دنوں پروفيشنل باکسنگ کے مقابلوں ميں ورلڈ باکسنگ کونسل کا سلور فلائی ویٹ ٹائٹل بھي جیتا۔ ان کي کہاني ان ہي کي زباني