انڈیا کے زیر انتظام کشمیر میں شرینگر شہر کے بازار کا ایک منظر
اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

محصور کشمیریوں کے لیے چند گھنٹوں کی نرمی

انڈیا کے زیر انتظام کشمیر میں اتوار کو طویل عرصے بعد دوپہر کے وقت تجارتی سرگرمیاں بحال ہوئیں۔

گیارہ ہفتوں سے جاری احتجاجی تحریک کے دوران پہلی مرتبہ علیحدگی پسندوں نے صرف آدھے دن کی ہڑتال کا اعلان کیا تھا، جس کی وجہ سے بازاروں اور سڑکوں میں زندگی کے آثار پھر سے نمودار ہوئے۔

26سالہ شورش میں یہ پہلا موقعہ ہے کہ اس قدر طویل عرصے تک وادی میں کرفیو اور ہڑتال کا سلسلہ جاری ہے۔

حالات کے حصار اور نرمی کے وقفوں میں لوگ کیسے جی لیتے ہیں؟ سرینگر سے ریاض مسرور کی رپورٹ

متعلقہ عنوانات