BBCi Home PageBBC World NewsBBC SportBBC World ServiceBBC WeatherBBC A-Z
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
South Asia News
BBCHindi.com
BBCPersian.com
BBCPashto.com
BBCArabic.com
BBCBengali.com
Learning English
 
 
  ہماری کھیلوں کی سائٹ
 
 
  احمد قریع، ہمہ جہت شخصیت
 
 
  کین کن میں کرنا کیا ہے؟
 
 
  شیرون کا دورۂ ہند
 
 
  ’غیرت‘ کے سات سو شکار
 
 
  قبائلی علاقوں کے بھوت اسکول
 
 
  مشرق وسطی میں طاقت کا نیا محور
 
 
  گیارہ ستمبر
آخری باتیں
 

جنگ عراق کا سچ جھوٹ
 

کراچی ساحل: زہریلی لہریں
 

موسیقی، فلم، ٹی وی ڈرامہ
 

دنیا ایک کلِک دور
 
 
 
:تازہ خبریں
 
میں غدار نہیں: مشرف
’القاعدہ اب بھی سرگرم ہے‘
اسامہ کی نئی وڈیو ٹیپ
’دراندازی بند کرائیں گے‘
سویڈش وزیر چل بسیں
جنس معلوم کرنےپرپابندی
بیمہ کمپنیاں القاعدہ پر مقدمہ کریں گی
یونان: پاکستانی ڈوب گئے
’نقشِہ راہ پر قائم ہیں‘
کراچی ساحل: پابندی برقرار
سامان میں انسان
بلوچستان: وزیر کے بھائی گرفتار
تعلقات مضبوط کرنےکی ضرورت: شیرون
لڑکا، امریکی فوجی ہلاک
بالی دھماکہ: موت کی سزا
گرینچ 20:39 - 09/05/2003
مائیکروسافٹ کی خرابی پاکستانی نے پکڑی
ہیکروں نےاس خرابی کا فائدہ اٹھا کر ویب سائٹوں پرحملےکیے
ہیکروں نےاس خرابی کا فائدہ اٹھا کر ویب سائٹوں پرحملےکیے

دنیا کی سب سے بڑی سافٹ ویئر کمپنی مائیکروسافٹ نے اعتراف کیا ہے کہ اس کی ای۔میل اوردیگر سہولیات کے بیس کروڑ صارفین کو ہیکروں کی زد میں آنے کا خطرہ لاحق ہے۔

بظاہر ایسا دکھائی دیتا ہے کہ ہیکروں نے مائیکروسافٹ کے سافٹ ویئر میں موجود خامیوں کو گزشتہ ایک ماہ کے دوران نشانہ بنایا ہے لیکن مائیکروسافٹ نے وضاحت کی ہے کہ اس نے حملے کا نشانہ بننے والے ای۔میل ایڈریسوں کو ’لاک‘ کر دیا ہے اور سافٹ ویئر میں موجود خامی کو دور کر لیا ہے۔

سافٹ ویئر میں موجود خامی کے باعث ہیکر ایک خاص ویب ایڈریس کی مدد سے کسی بھی ای۔میل ایڈریس تک رسائی حاصل کر کے اسے متاثر کر سکتے ہیں۔

اس بات کا انکشاف ایک پاکستانی کمپنی ’جیم نیٹ‘ کے اعلیٰ افسر محمد فیصل رؤف ڈنکا نے کیا ہے کیونکہ ان کے متعدد ای۔میل اکاؤنٹس ہائیجیکروں کے ہاتھوں متاثر ہوئے تھے۔

’پاسپورٹ‘ مائکروسافٹ کے سافٹ ویئر کا وہ حصہ ہے جو ونڈوز ایکس پی، ہاٹ میل اور انسٹنٹ میسجنگ یعنی انٹرنیٹ پر چیٹنگ کے صارفین کے اکاؤنٹس کے تحفظ کے لیے مرتب کیا گیا ہے۔

انٹرنیٹ کے ذریعے کاروبار کرنے والے عناصر ’پاسپورٹ‘ کے ذریعے ایک علیحدہ ایڈریس حاصل کرتے ہیں تاکہ انٹرنیٹ کے صارفین ان ایڈریسوں کے ذریعے محفوظ پیغام رسانی سے مستفید ہو سکیں۔

عین ممکن ہے کہ ہیکروں نے مائیکروسافٹ کے سافٹ ویئر میں موجود خامی کا فائدہ اٹھاتے ہوئے انٹرنیٹ پر موجود لوگوں سے متعلق تفصیکلات تک رسائی حاصل کر کے ان کے کریڈٹ کارڈوں کے نمبر اور دیگر تفصیلات کا پتہ لگا لیا ہو۔

پاکستان میں انٹرنیٹ کی سہولیات فراہم کرنے والی کمپنی ’جیم نیٹ‘ کے اعلیٰ افسر محمد فیصل رؤف ڈنکا نے مائیکروسافٹ کے پاسپورٹ میں موجود خامی کی نشاندہی کی ہے۔

فیصل رؤف اور ان کے متعدد دوستوں کے پاسپورٹ اکاؤنٹس ہیکروں کے حملوں کی زد میں آئے تھے۔ انہوں نے اس مسئلے کا پتہ یوں چلایا کہ پہلے انہوں نے اس ویب سائٹ تک رسائی حاصل کی جس کے ذریعے دیگر لوگوں کے ذاتی انٹرنیٹ اکاؤنٹس تک خصوصی رسائی دی جاتی ہے اور اُن اکاؤنٹس کے پاسورڈ بھی تبدیل کیے جا سکتے ہیں۔

فیصل کہتے ہیں کہ ’یہ سب کرنا بہت آسان ہے اور یہ اس قدر سہل نہیں ہونا چاہیے کیونکہ یہ کام (دوسروں کے اکاؤنٹس تک رسائی) کوئی بھی کر سکتا ہے‘۔

اطلاعات کے مطابق فیصل نے سافٹ ویئر میں موجود خامی سے آگاہ کرنے کے لیے مائیکروسافٹ کو دس پیغامات بھیجے لیکن انہیں کوئی جواب موصول نہ ہوا۔

تاہم مائیکروسافٹ نے مسئلے کو اس وقت توجہ دی جب لوگوں نے انٹرنیٹ کی دیگر سائیٹوں پر ایسی شکایات شائع کیں۔

اس صورت حال کے باعث تجارت کا امریکی وفاقی کمیشن مائیکروسافٹ پر جرمانہ عائد کر سکتا ہے کیونکہ دو ہزار دو میں طے پانے والے معاہدے کے تحت مائیکروسافٹ نے اپنے انٹرٹیٹ اکاؤنٹس کو تحفظ فراہم کرنے کی ذمہ داری قبول کی تھی اور کہا تھا کہ وہ تحفظ فراہم کرنے میں ناکامی کی صورت میں وہ جرمانہ ادا کرے گی۔
 
 

 urdu@bbc.co.uk
 
 
 
 < عالمی خبریں 43 زبانوں میںواپس اوپر ^^ BBC Copyright