BBCi Home PageBBC World NewsBBC SportBBC World ServiceBBC WeatherBBC A-Z
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
South Asia News
BBCHindi.com
BBCPersian.com
BBCPashto.com
BBCArabic.com
BBCBengali.com
Learning English
 
 
  ہماری کھیلوں کی سائٹ
 
 
  احمد قریع، ہمہ جہت شخصیت
 
 
  کین کن میں کرنا کیا ہے؟
 
 
  شیرون کا دورۂ ہند
 
 
  ’غیرت‘ کے سات سو شکار
 
 
  قبائلی علاقوں کے بھوت اسکول
 
 
  مشرق وسطی میں طاقت کا نیا محور
 
 
  گیارہ ستمبر
آخری باتیں
 

جنگ عراق کا سچ جھوٹ
 

کراچی ساحل: زہریلی لہریں
 

موسیقی، فلم، ٹی وی ڈرامہ
 

دنیا ایک کلِک دور
 
 
 
:تازہ خبریں
 
میں غدار نہیں: مشرف
’القاعدہ اب بھی سرگرم ہے‘
اسامہ کی نئی وڈیو ٹیپ
’دراندازی بند کرائیں گے‘
سویڈش وزیر چل بسیں
جنس معلوم کرنےپرپابندی
بیمہ کمپنیاں القاعدہ پر مقدمہ کریں گی
یونان: پاکستانی ڈوب گئے
’نقشِہ راہ پر قائم ہیں‘
کراچی ساحل: پابندی برقرار
سامان میں انسان
بلوچستان: وزیر کے بھائی گرفتار
تعلقات مضبوط کرنےکی ضرورت: شیرون
لڑکا، امریکی فوجی ہلاک
بالی دھماکہ: موت کی سزا
گرینچ 04:02 - 28/07/2003
ایس ایم ایس سے طلاق
رشتہ، نکاح انٹرنیٹ کے ذریعے، طلاق ایس ایم ایس پر
رشتہ، نکاح انٹرنیٹ کے ذریعے، طلاق ایس ایم ایس پر

فوری طلاق کا حصول شاید اتنا آسان کبھی نہ تھا جتنا اب ملیشیا میں ایک شرعی عدالت کی طرف سے موبائل فون پر ایس ایم ایس کے ذریعے دی گئی طلاق کو موثر قرار دینے کے بعد ہو جائے گا۔

ملیشیا میں حکومت کے مشیر برائے مذہبی امور ڈاکٹر عبدل حمید نے کہا ہے کہ موبائل فون پر فوری تحریری پیغام رسانی کی سروس یعنی ایس ایم ایس کے ذریعے دی گئی طلاق اگر واضح ہو تو بقول ان کے اسلامی قانون کے تحت ایسی طلاق موثرہوگی۔

انگریزی روزنامے نیو سٹریٹس ٹائمز نے ڈاکٹر حمید کے حوالے سے بتایا ہے کہ ایس ایم ایس بھی تحریر کی ایک قسم ہے۔

ملیشیا میں جمعرات کو شرعی عدالت نے ایک مقدمے کا فیصلہ سناتے ہوئے ایک مرد کی طرف سے ایس ایم ایس کے ذریعے دی گئی طلاق کو موثر قرار دیا تھا۔ یہ مقدمہ عزیدہ فضلینہ عبدل لطیف کی طرف سے دائر کیا گیا تھا۔

درخواست میں کہا گیا تھا اس کے خاوند شمس الدین نے اسے ایس ایم ایس کے ذریعے پیغام بھجوایا تھا کہ اگر اس نے والدین کا گھر نہیں چھوڑا تو اسے طلاق ہو جائے گی۔

ملیشیا کے ایک اخبار کے مطابق اس سے پہلے سنگاپور کی اسلامی عدالت بھی گزشتہ سال ایک مقدمے میں ایس ایم ایس کے ذریعے دی گئی طلاق کو جائز قرار دے چکی ہے۔
 
 

 urdu@bbc.co.uk
 
 
 
 < عالمی خبریں 43 زبانوں میںواپس اوپر ^^ BBC Copyright