BBCUrdu.com
  •    تکنيکي مدد
 
پاکستان
انڈیا
آس پاس
کھیل
نیٹ سائنس
فن فنکار
ویڈیو، تصاویر
آپ کی آواز
قلم اور کالم
منظرنامہ
ریڈیو
پروگرام
فریکوئنسی
ہمارے پارٹنر
ہندی
فارسی
پشتو
عربی
بنگالی
انگریزی ۔ جنوبی ایشیا
دیگر زبانیں
 
وقتِ اشاعت: Saturday, 16 August, 2003, 13:17 GMT 17:17 PST
 
یہ صفحہ دوست کو ای میل کیجیئے پرِنٹ کریں
حملہ ناکام: مائیکروسافٹ
 
مائیکروسافٹ ایکس پی ورم کا مرکزی نشانہ بنا
مائیکروسافٹ ایکس پی ورم کا مرکزی نشانہ بنا

کمپیوٹرسافٹ وئیر کی سب سے بڑی کمپنی مائیکروسافٹ نے اس اعتماد کا اظہار کیا ہے کہ اس نے انٹرنیٹ ایم ایس بلاسٹMSBlast نامی کمپیوٹر ورم کے حملوں کو ناکام بنا دیا ہے۔

اس سے پہلے کہا جا رہا تھا کہ متاثر ہونے والے کمپیوٹروں پر سولہ اگست کی صبح ایک منظم حملہ ہو سکتا ہے۔ اس بارے میں خدشہ تھا کہ ان حملوں سے مائیکروسافٹ کی اس ویب سائٹ پر بہت زیادہ تعداد میں ڈیٹا ’پھینکا‘ جائےگا، جس سے ونڈوز استعمال کرنے والے وائرسوں اور دیگر بگز سے محفوظ رہنے کے لئے حفاظتی سافٹ ویئر ڈاؤن لوڈ کرتے ہیں۔

لیکن مائیکروسافٹ کا کہنا ہے کہ اس نے کئی حفاظتی اقدامات کئے ہیں اور اس کے بقول اس کو حملے کی شروعات کے ممکنہ وقت کے کئی گھنٹے بعد بھی کسی طرح کے مسائل کی شکایت نہیں ملی ہے۔

تاہم واشنگٹن میں بی بی سی کے نامہ نگار کیون انڈرسن کا کہنا ہے کہ ایم ایس بلاسٹ ورم پہلے ہی کئی شکلوں میں ظاہر ہو چکا ہے اور اس بات کا خدشہ ہے کہ آنے والے ہفتوں اور مہینوں میں اس ورم کی مزید خطرناک قسمیں سامنے آ سکتی ہیں۔

حملے کے دوسرے مرحلے میں ایم ایس بلاسٹ ورم نے دنیا بھر میں تقریباً تین لاکھ کمپیوٹروں کو متاثر کیا ہے جس کی وجہ کمپیوٹر بار بار ری بوٹ ہوتے رہتے ہیں۔

لیکن ہوسکتا ہے کہ ورم میں پائے جانے والے ایک نقص نے مائیکروسافٹ کو اس کے حملوں کو ناکام بنانے کے قابل بنایا ہو۔

ایم ایس بلاسٹ ورم کمپیوٹروں کو www.windowsupdate.com پر کال کرنے کی ہدایت کرتا ہے جو کہ مائیکروسافٹ کے اس اصل ویب سائٹ پر پہنچنے کا صحیح ایڈریس نہیں ہے۔

اگرچہ مائیکروسافٹ کئی دنوں تک www.windowsupdate.com پر کی جانے والی کالوں کو اپنے اصل ویب سائٹ پر ری ڈائریکٹ کرتا رہا ہے لیکن ہفتہ کے روز ہونے والے ممکنہ حملے کے خلاف دفاع کے لئے کمپنی نے جمعرات ہی کو کالیں ری ڈائریکٹ کرنے کے خودکار نظام کو ناکارہ بنا دیا۔

مائیکروسافٹ کے مطابق اس کی طرف سے کئے گئے مدافعتی اقدامات موثر ثابت ہوئے ہیں۔

مائیکروسافٹ کے ایک ترجمان کا کہنا ہے کہ ہم اب تک بغیر کسی مسئلے کے کئی ٹائم زونوں سے گزر چکے ہیں اور ہمیں امید ہے کہ دنیا بھر میں مقررہ وقت کے خاتمے کے بعد کوئی مسئلہ پیش نہیں آئے گا۔

 
 
تازہ ترین خبریں
 
 
یہ صفحہ دوست کو ای میل کیجیئے پرِنٹ کریں
 
 

واپس اوپر
Copyright BBC
نیٹ سائنس کھیل آس پاس انڈیاپاکستان صفحہِ اول
 
منظرنامہ قلم اور کالم آپ کی آواز ویڈیو، تصاویر
 
BBC Languages >> | BBC World Service >> | BBC Weather >> | BBC Sport >> | BBC News >>  
پرائیویسی ہمارے بارے میں ہمیں لکھیئے تکنیکی مدد