BBCUrdu.com
  •    تکنيکي مدد
 
پاکستان
انڈیا
آس پاس
کھیل
نیٹ سائنس
فن فنکار
ویڈیو، تصاویر
آپ کی آواز
قلم اور کالم
منظرنامہ
ریڈیو
پروگرام
فریکوئنسی
ہمارے پارٹنر
ہندی
فارسی
پشتو
عربی
بنگالی
انگریزی ۔ جنوبی ایشیا
دیگر زبانیں
 
وقتِ اشاعت: Monday, 08 September, 2003, 14:12 GMT 18:12 PST
 
یہ صفحہ دوست کو ای میل کیجیئے پرِنٹ کریں
احمد قریع، ہمہ جہت شخصیت
 
احمد قریع  کو استعفیٰ دینے والے ابو ماذن کی جگہ وزیراعظم نامزد کیا گیا ہے۔

پینسٹھ سالہ احمد قریع کو ایک معتدل مزاج اور عملیت پسند رہنما تصور کیا جاتا ہے۔ وہ انیس سو سینتیس میں یروشلم کے علاقے ابو دس میں پیدا ہوئے اور پیشے کے لحاظ سے بینکار ہیں۔ انہوں نے انیس سو ساٹھ کی دہائی کے اواخر میں تنظیم آزادئی فلسطین (پیلسٹینیئن لبریشن آرگنائزیشن یا پی ایل او) میں شمولیت اختیار کی تاہم انیس سو ستّر کی دہائی کے وسط میں لبنان میں تنظیم کے اقتصادی اور پیداواری امور کا نظم و نسق سنبھالنے تک وہ پی ایل او کے رہنما کی حیثیت سے منظر عام پر نہیں آسکے تھے۔

انیس سو اسّی تک پی ایل او کے اس اقتصادی و تجارتی شعبے کی سالانہ آمدنی چار کروڑ ڈالر تک جاپہنچی جو اپنے چھ ہزار پانچ سو کل وقتی ملازمین کے ساتھ لبنان میں ملازمت فراہم کرنے والے چند بڑے اداروں میں سے ایک تصور کیا جانے لگا۔

تاہم جب تنظیم کو لبنان سے بیدخل کیا گیا تو ابو اعلیٰ یاسر عرفات کے ہمراہ تیونس جاپہنچے اور بعد ازاں تنظیم کے اعلیٰ قائدین کی یکے بعد دیگرے اموات یا قتل ہوجانے کے نتیجے میں تنظیم میں ان کا اثر رسوخ بڑھتا چلاگیا یہاں تک کہ وہ انیس سو نواسی میں تنظیم کی مرکزی مجلس عاملہ (سینٹرل کمیٹی) کے رکن منتخب ہوئے۔ یہیں سے ان کے سیاسی سفر کا آغاز ہوا اور انہوں نے مذاکرات میں اپنا بڑھتا ہوا کردار ادا کرنا شروع کیا۔

اوسلو کے خفیہ مذاکرات میں ایک اہم کردار ادا کرنے کے بعد وہ اسرائیل سے ہونے والے کئی مذاکرات میں حصہ لیتے رہے۔ فلسطینی تجزیہ کار یزید سائیگ کے مطابق ان کی سب سے گراں قدر خدمات میں انیس سو ترانوے میں امداد کے بارے میں ہونے والے عالمی بینک کے ایک اجلاس میں فلسطینی ترقیاتی منصوبے کو پیش کرنا شامل ہے۔

یہ ابو اعلیٰ ہی تھے جنہوں نے فلسطینی ترقیاتی منصوبے کا تصور پیش کیا اور پھر اس کی مالی معاونت کے ذرائع تلاش کئے بعد ازاں یہی منصوبہ فلسطینی ریاست کے بارے تنظیم آزادئی فلسطین کی حکمت عملی کی مرکزی دستاویز کی حیثیت سے سامنے آیا۔

فلسطینی قانون ساز کونسل کا سربراہ منتخب ہونے سے قبل انہوں نے فلسطین کی اقتصادی کونسل برائے ترقی و تعمیر نو کی تشکیل میں بھی نمایاں کردار ادا کیا۔

ابو اعلیٰ کو بذلہ سنج، خوش طبع، ظریف ، برد بار، متحمّل مزاج اور روادار ہونے کی بنا پر ایک ہمہ جہت شخصیت تصور کیا جاتا ہے جو یقینی طور پر اپنی ان صفات کی بنا پر ایک اچھے مذاکرات کار کے طور پر جانے جاتے ہیں۔

معاملات کو آسان تر کرکے دیکھنے اور دکھانے کے اپنے اسی انداز کی بنا پر انہوں نے چند برسوں میں ہی اپنے اسرائیلی ہم منصب افراد کی دوستی جیت لی ہے۔

 
 
تازہ ترین خبریں
 
 
یہ صفحہ دوست کو ای میل کیجیئے پرِنٹ کریں
 
 

واپس اوپر
Copyright BBC
نیٹ سائنس کھیل آس پاس انڈیاپاکستان صفحہِ اول
 
منظرنامہ قلم اور کالم آپ کی آواز ویڈیو، تصاویر
 
BBC Languages >> | BBC World Service >> | BBC Weather >> | BBC Sport >> | BBC News >>  
پرائیویسی ہمارے بارے میں ہمیں لکھیئے تکنیکی مدد