BBCi Home PageBBC World NewsBBC SportBBC World ServiceBBC WeatherBBC A-Z
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
South Asia News
BBCHindi.com
BBCPersian.com
BBCPashto.com
BBCArabic.com
BBCBengali.com
Learning English
 
 
  ہماری کھیلوں کی سائٹ
 
 
  احمد قریع، ہمہ جہت شخصیت
 
 
  کین کن میں کرنا کیا ہے؟
 
 
  شیرون کا دورۂ ہند
 
 
  ’غیرت‘ کے سات سو شکار
 
 
  قبائلی علاقوں کے بھوت اسکول
 
 
  مشرق وسطی میں طاقت کا نیا محور
 
 
  گیارہ ستمبر
آخری باتیں
 

جنگ عراق کا سچ جھوٹ
 

کراچی ساحل: زہریلی لہریں
 

موسیقی، فلم، ٹی وی ڈرامہ
 

دنیا ایک کلِک دور
 
 
 
:تازہ خبریں
 
میں غدار نہیں: مشرف
’القاعدہ اب بھی سرگرم ہے‘
اسامہ کی نئی وڈیو ٹیپ
’دراندازی بند کرائیں گے‘
سویڈش وزیر چل بسیں
جنس معلوم کرنےپرپابندی
بیمہ کمپنیاں القاعدہ پر مقدمہ کریں گی
یونان: پاکستانی ڈوب گئے
’نقشِہ راہ پر قائم ہیں‘
کراچی ساحل: پابندی برقرار
سامان میں انسان
بلوچستان: وزیر کے بھائی گرفتار
تعلقات مضبوط کرنےکی ضرورت: شیرون
لڑکا، امریکی فوجی ہلاک
بالی دھماکہ: موت کی سزا
گرینچ 07:22 - 10/09/2003
بالی دھماکہ: موت کی سزا
انڈونیشیا کے جزیرے بالی میں ہونے والے بم دھماکے کے

امام سامودرا اعلی تعلیم یافتہ ہیں
مجرم عبدالعزیز کو ایک عدالت نے موت کی سزا سنائی ہے۔

عبدالعزیز کو جو کہ امام سمودرہ کے نام سے جانے جاتے ہیں جب سزا سنانے کے لیے کمرہ عدالت میں لایا گیا تو انہوں نےہوا میں مکے لہراتے ہوئے اللہ اکبر کے نعرے لگائے۔

بالی بم دھماکے میں دو سو بیس افراد ہلاک ہو گئے تھے جن میں ایک بڑی تعداد آسٹریلیا اور مغربی ممالک کے باشندوں کی تھی۔

اسی سال اگست میں بالی بم دھماکے میں ملوث ایک اور شخص امروزی کو بھی اسی عدالت نے موت کی سزا سنائی تھی۔

عبدالعزیر سفید رنگ کی قمیض اور سیاہ ٹوپی میں ملبوس تھے اور مطمئن دکھائی دے رہے تھے۔ جج جب ان کی سزا پڑھ کر سنا رہے تھے تو وہ اپنی دھاڑی میں ہاتھ پھیررہے تھے۔

عبدالعزیز پر الزام لگایا گیا تھا کہ وہ بالی بم دھماکے کی نگرانی کر رہے تھے اور انہوں نے ہی اپنے باقی ساتھیوں کو مختلف کام سونپے تھے۔

اپنی گرفتاری کے فوراً بعد انہوں نے پولیس کی تفتیش کے دوران اپنے جرم کا اعتراف کیا تھا لیکن اس کے بعد انہوں نے اس سے انکار کر دیا۔

عدالت میں سماعت کے دوران انہوں نے امریکہ اور آسٹریلیا کے خلاف اپنے غصے کا اظہار کیا اور کہا کہ وہ اس بات پر خوش ہیں کے دھماکے میں امریکی اور آسٹریلوی باشندے بڑی تعداد میں مارے گئے۔ تاہم انہوں نے اڑتیس انڈونیشیا کے باشندوں کے مارے جانے پر افسوس کا اظہار کیا۔

امام سامودرہ نے کہا کہ وہ موت کی سزا سنائے جانے پر خوش ہیں کیونکہ موت انھیں خدا کے قریب لیے جائے گی۔
 
 

 urdu@bbc.co.uk
 
 
 
 < عالمی خبریں 43 زبانوں میںواپس اوپر ^^ BBC Copyright