بولان: فورسز کا تین عسکریت پسندوں کی ہلاکت کا دعویٰ

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ایف سی کے ترجمان کا کہنا ہے کہ ہلاک ہونے والے افراد ٹرینوں پر حملے اور دیگر تخریبی سرگرمیوں میں ملوث تھے

پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے علاقے بولان میں سکیورٹی فورسز نے ایک کارروائی میں تین عسکریت پسندوں کو ہلاک کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔

٭ پولیس اہلکاروں کی یاد میں شمعیں روشن

کوئٹہ میں فرنٹیئر کور کے ترجمان کی جانب سے فراہم کردہ معلومات کے مطابق عسکریت پسندوں کے خلاف کارروائی بولان کے علاقے مشکاف میں کی گئی۔

ترجمان کا کہنا تھا کہ اس کارروائی کے دوران فائرنگ کا تبادلہ ہوا جس میں تین مبینہ عسکریت پسند ہلاک ہوگئے۔

ایف سی کے ترجمان کا کہنا ہے کہ ہلاک ہونے والے افراد ٹرینوں پر حملے اور دیگر تخریبی سرگرمیوں میں ملوث تھے۔

ترجمان کے مطابق ہلاک ہونے والے افراد کا تعلق ایک کالعدم عسکریت پسند تنظیم سے تھا۔

آزاد ذرائع سے ان افراد کی کسی عسکریت پسند تنظیم سے تعلق اور فائرنگ کے تبادلے میں ہلاکت کی تاحال تصدیق نہیں ہوئی ہے۔

ادھرکوئٹہ سے متصل ضلع مستونگ میں نامعلوم مسلح افراد کی فائرنگ سے پولیس کا ایک ہیڈ کانسٹیبل ہلاک ہو گیا۔

مستونگ انتظامیہ کے ذرائع کے مطابق پولیس کے ہیڈ کانسٹیبل ڈیوٹی کے بعد گھر جارہے تھے کہ کنڈاؤ کے علاقے میں ان پر نامعلوم مسلح افراد نے حملہ کیا۔

انتظامیہ کے ذرائع کے مطابق حملے میں ہیڈ کانسٹیبل ہلاک ہوا۔

مستونگ میں پولیس اہلکار کو ہلاک کرنے کی ذمہ داری کالعدم لشکر جھنگوی العالمی نے قبول کی ہے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں