چمن اور ڈیرہ بگٹی میں حملے، اہلکار سمیت دو ہلاک

چمن تصویر کے کاپی رائٹ Matiullahachakzai

پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے سرحدی شہر چمن میں نامعلوم مسلح افراد کے حملے میں ایک پولیس اہلکار سمیت دو افراد ہلاک ہوگئے جبکہ ضلع ڈیرہ بگٹی میں ایک تعمیراتی کمپنی پر حملہ کیا گیا۔

چمن ایک سینیئر پولیس اہلکار نے بتایا کہ پولیس اہلکار سمیت دو افراد کی ہلاکت کا واقعہ جمعرات کی شب محمود آباد کے علاقے میں پیش آیا۔

اہلکار کے مطابق اس حملے میں مسلح افرادنے پولیس اہلکاروں پر حملہ کیا۔

اس حملے میں ایک ہیڈکانسٹیبل سمیت دو افراد ہلاک جبکہ ایک پولیس اہلکار زخمی ہوا۔ ہلاک ہونے والے دوسرا شخص راہگیر بتایا جاتا ہے۔

پولیس اہلکار نے بتایا کہ فائرنگ کے تبادلے میں ایک حملہ آور کو زخمی حالت میں گرفتار کیا گیا ہے۔

تاحال اس حملے کے محرکات معلوم نہیں ہوسکے ہیں۔

ادھر ضلع ڈیرہ بگٹی میں نامعلوم مسلح افراد نے ایک تعمیراتی کمپنی پر حملہ کیا ہے۔ ڈیرہ بگٹی میں انتظامیہ کے ایک اہلکار نے بتایا کہ یہ حملہ پٹوخ کے علاقے میں کیا گیا۔

ذرائع کے مطابق اس علاقے میں ایک تعمیراتی کمپنی سڑک کی تعمیر میں مصروف ہے۔

ذرائع نے بتایا کہ نامعلوم مسلح افراد نے کمپنی کی مشینری اور اہلکاروں پر بھاری ہتھیاروں سے حملہ کیا جس کے باعث اس علاقے میں زوردار دھماکوں کی آوازیں سنائی دیں۔

ذرائع کے مطابق فوری طور پر اس حملے میں کسی جانی اور مالی نقصان کی اطلاع موصول نہیں ہوئی۔

ڈیرہ بگٹی کا شمار بلوچستان کے ان علاقوں میں ہوتا ہے جو کہ شورش سے متاثر ہیں۔ اس علاقے میں پہلے بھی اس طرح کے حملے ہوتے رہے ہیں۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں