لاپتہ سماجی کارکن سلمان حیدر واپس آ گئے

salman تصویر کے کاپی رائٹ Facebook

اسلام آباد میں پولیس حکام کا کہنا ہے کہ گذشتہ دنوں لاپتہ ہونے والے بلاگر اور سماجی کارکن سلمان حیدر واپس آئے ہیں۔

ان کے خاندان نے بھی ان کی واپسی کی تصدیق کی ہے اور کہا ہے کہ وہ بخیریت ہیں۔ اس بارے میں مزید تفصیلات پولیس جاری کرے گی۔

فاطمہ جناح یونیورسٹی کے پروفیسر، انسانی حقوق کے کارکن اور سماجی امور پر شاعری کے حوالے سے پہچانے جانے والے پروفیسر سلمان حیدر اس ماہ کی چھ تاریخ سے اسلام آباد سے لاپتہ ہو گئے تھے۔

سلمان حیدر کی گمشدگی کے خلاف ملک بھر میں مظاہرے ہوئے تھے جن میں حکومت سے مطالبہ کیا گیا تھا کہ ان کی جلد از جلد بازیابی ممکن بنائی جائے۔

وزیرِ داخلہ چوہدری نثار علی خان نے بھی ان کی بازیابی کے لیے پولیس اور دیگر متعلقہ اداروں کو کوششیں تیز کرنے اور تمام وسائل بروئے کار لانےکی ہدایت جاری کی تھی۔

تصویر کے کاپی رائٹ Twitter
Image caption پروفیسر سلمان حیدر کی بازیابی کے لیے فاطمہ جناح کی طالبات کا مظاہرہ

اسلام آباد کے علاقے لوئی بھیر کے پولیس سٹیشن میں درج کی گئی ایف آئی آر کے مطابق سلمان حیدر چھ جنوری کی رات کو اسلام آباد کے نواحی علاقے بنی گالا کے علاقے میں اپنے دوستوں کے ہمراہ موجود تھے اور انھوں نے اپنی اہلیہ کو اطلاع دی تھی کہ وہ رات آٹھ بجے تک گھر پہنچ جائیں گے۔ تاہم اس کی بجائے ان کی اہلیہ کو سلمان حیدر کے نمبر سے پیغام موصول ہوا کہ کورال چوک سے ان کی گاڑی لے لی جائے۔

اس کے بعد تھانہ لوئی بھیر میں ان کے اغوا کی رپورٹ درج کرلی گئی تھی۔

سلمان حیدر پانچ سال سے زائد عرصے سے فاطمہ جناح یونیورسٹی سے منسلک ہیں۔ وہ شاعر ہیں اور تھیئٹر میں اداکاری، ڈراما نگاری اور صحافت جیسے شعبوں سے وابستہ رہے ہیں۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں