گذشتہ ہفتے کا پاکستان

پاکستان میں گذشتہ ہفتے رونما ہونے والے واقعات کی تصویری عکاسی

فوجی ہیلی کاپٹر
،تصویر کا کیپشن

پاکستان میں دہشت گردی کی حالیہ لہر کے بعد شروع کردہ سکیورٹی آپریشن 'ردالفساد' کے تحت ملک کے چاروں صوبوں میں کارروائیاں کی جارہی ہیں۔

،تصویر کا کیپشن

اکیس فروری کو پاکستان کے صوبہ خیبر پختونخوا کے علاقے چارسدہ میں ضلع کچہری پر شدت پسندوں کے حملے میں سات افراد ہلاک ہوئے جبکہ پولیس نے تینوں حملہ آوروں کو ہلاک کر دیا ۔ اس دھماکے کی ذمہ داری شدت پسند تنظیم جماعت الاحرار کی جانب سے قبول کی گئی ہے اور تنظیم کے ایک ترجمان اسد منصور نے بیان میں کہا ہے کہ یہ کارروائی بھی ’غازی آپریشن‘ کا حصہ ہے۔

،تصویر کا کیپشن

پاکستان کی سپریم کورٹ نے پاناما دستاویزات کے بارے میں وزیراعظم نواز شریف سمیت چھ افراد کی نااہلی سے متعلق درخواستوں کی سماعت مکمل کرتے ہوئے فیصلہ محفوظ کر لیا۔ گذشتہ سال پاناما پیپرز کے نام سے شائع ہونے والی دستاویز میں پاکستانی وزیراعظم کے اہل خانہ کے نام سامنے آتے ہی تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان نے شریف خاندان پر بدعنوانی کا الزام لگاتے ہوئے انھیں اقتدار سے الگ کرنے کے لیے مہم کا آغاز کیا تھا۔

،تصویر کا کیپشن

پاکستان کے شہر لاہور کے قذافی سٹیڈیم میں سیکیورٹی کے سخت انتظامات کیے جارہے ہیں۔ لاہور میں بلاسٹ اور پاکستان بھر میں دسشت گردی کے واقعات کے بعد متعدد کرکٹ پنڈٹوں نے لاہور میں فائنل کروانے کے پی سی بی کے فیصلے کو تشویش کی نظر سے دیکھا ہے۔

،تصویر کا کیپشن

پاکستان کے شہر کراچی میں فیشن پاکستان ویک 22 فروری کو اختتام پذیر ہوا جس میں 20 سے زائد فیشن ڈیزائنرز نے اپنے ملبوسات کی نمائش کی۔

،تصویر کا کیپشن

ڈی ایچ اے لاہور کے زیڈ بلاک کی کمرشل مارکیٹ میں جمعرات کی صبح ایک زوردار دھماکہ ہوا جس میں سات افراد ہلاک اور 35 زخمی ہوئے۔پاکستان کے صوبہ پنجاب کے وزیرِ قانون رانا ثنا اللہ نے کہا ہے کہ لاہور کے علاقے ڈیفنس کے کمرشل پلازے میں ہونے والا دھماکہ بارودی مواد سے نہیں بلکہ ممکنہ طور پر سلنڈر پھٹنے سے ہوا۔