تصاویر: بم دھماکے کے بعد لاہور سوگوار

لاہور میں پیر کو خود کش حملے میں ہلاک ہونے والوں کی آخری رسومات ادا کی گئیں۔

،تصویر کا کیپشن

پیر کو لاہور میں غیر قانونی تجاوزات ہٹانے کے دوران ہونے والے دھماکے میں کم از کم 26 افراد ہلاک اور 50 سے زیادہ زخمی ہو گئے تھے۔ منگل کو ان افراد میں سے بیشتر کی تدفین کر دی گئی۔

،تصویر کا کیپشن

یہ حملہ موٹرسائیکل پر سوار ایک لڑکے نے کیا جس کی عمر 15، 16 برس بتائی جا رہی ہے۔ حملے میں ہلاک ہونے والوں کے جنازوں میں لوگوں نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔

،تصویر کا کیپشن

ہلاک ہونے والے پولیس افسران کو پاکستانی پرچم میں لپیٹ کر سپردِ خاک کیا گیا اور ان کے تابوتوں پر گلاب کی پتیاں نچھاور کی گئیں

،تصویر کا کیپشن

اس حملے میں آٹھ پولیس اہلکار اپنی جانوں سے ہاتھ دھو بیٹھے جن میں دو سگے بھائی بھی شامل تھے۔ آخری رسومات میں ان کے ساتھیوں نے بھی حصہ لیا۔

،تصویر کا کیپشن

اس حملے کی ذمہ داری طالبان نے قبول کی ہے

،تصویر کا کیپشن

ہمارے نامہ نگار عمر دراز ننگیانہ کے مطابق حملہ آور کا چہرہ دھماکے میں اس قدر مسخ ہو گیا تھا کہ اس کی شناخت ممکن نہیں تھی۔ پولیس نے اس کے جسم کے کچھ حصے ڈی این اے ٹیسٹ کے لیے بھجوا دیے ہیں۔