قندیل کیس: مفتی عبدالقوی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے

مفتی عبدالقوی تصویر کے کاپی رائٹ Multan Police

ملتان میں جوڈیشل میجسٹریٹ نے ماڈل قندیل بلوچ کے مقدمہِ قتل میں مذہبی رہنما مفتی عبدالقوی کو چار دن کے ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کرنے کا حکم دیا ہے۔

ملتان پولیس کے مطابق جمعرات کو مفتی عبدالقوی کو میجسٹریٹ پرویز خان کی عدالت میں پیش کر کے 14 دن کا ریمانڈ مانگا گیا تھا تاہم عدالت نے صرف چار دن کا ریمانڈ دیتے ہوئے ملزم کو پیر کو عدالت میں دوبارہ پیش کرنے کا حکم دیا ہے۔

یہ بھی پڑھیے

قندیل قتل کیس: مفتی عبدالقوی فرار ہونے کے بعد گرفتار

قندیل بلوچ قتل اور مفتی عبدالقوی: کب کیا ہوا؟

قندیل بلوچ کے والدین کے ساتھ بی بی سی اردو کی خصوصی گفتگو

’قندیل بلوچ جو کرتی تھی دل سے کرتی تھی‘

’میں اب ہاتھ سے نکل چکی ہوں!‘

خوابوں کی تلاش میں موت سے جا ملی


پولیس نے مفتی عبدالقوی کو بدھ کو اُس وقت گرفتار کیا تھا جب وہ عدالت سے ضمانت کی درخواست خارج ہونے کے بعد جھنگ فرار ہونے کی کوشش کر رہے تھے۔

پولیس نے ان کے زیر استعمال موبائل فون سے ان کی لوکیشن معلوم کرنے کے بعد اُنھیں مظفر گڑھ سے حراست میں لیا تھا۔

یاد رہے کہ ملتان کے ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج کی عدالت نے بدھ کو ملزم کی ضمانت قبل از گرفتاری کی درخواست مسترد کر دی تھی اور انھیں گرفتار کرنے کا حکم دیا تھا تاہم وہ عدالت سے فرار ہوگئے تھے۔

مفتی عبدالقوی رویت ہلال کمیٹی کے بھی رکن تھے تاہم سوشل میڈیا پر قندیل بلوچ کے ساتھ تصاویر شائع ہونے کے بعد ان کی رکنیت معطل کردی گئی تھی اور یہ رکنیت تاحال معطل ہے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں