چینی سفارتخانے کی پاکستان میں مقیم اپنے شہریوں کو تنبیہ

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

چین نے جعمہ کے روز پاکستان میں مقیم اپنے شہریوں کو تنبیہ کی ہے کہ دہشتگرد تنظیموں کی جانب سے پاکستان میں چینی اہداف کو نشانہ بنانے کی منصوبہ بندی کے پیشِ نظر وہ سکیورٹی کے حوالے سے ہوشیار رہیں اور پرہجوم مقامات پر جانے سے گریز کریں۔

پاکستان میں چینی سفارت خانے نے اپنی ویب سائٹ پر اور ٹوئٹر پرایک پیغام میں اپنی شہریوں کو ہدایت کی ہے۔

شہریوں کی ہلاکت کی اطلاع پر چینی تشویش

یاد رہے کہ پاکستان اور چین کے درمیان سی پیک منصوبوں کے سلسلے میں ہزاروں چینی افراد پاکستان میں مقیم ہیں۔ چینی حکام اور کمپنیوں کے لیے اپنے چینی یا غیر ملکی ملازمین کو تحفظ فراہم کرنا ایک اہم موضوع رہا ہے۔

چین پاکستان کا ایک اہم اتحادی ہے جو سی پیک منصوبے کے تحت ملک میں جوہری توانائی کے منصوبوں، سڑکوں اور ڈیموں سمیت بنیادی ڈھانچے کے بڑے منصوبوں میں سرمایہ کاری کر رہا ہے۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ حکام کا کہنا ہے کہ دہشتگرد پاکستان میں چینی تنظیموں اور افراد کو جلد ہی حملوں کے ایک سلسلے کے ذریعے نشانہ بنانے والے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption نام نہاد اسلامی شدت پسند تنظیم دولت اسلامیہ کا کہنا ہے کہ مئی کے اواخر میں پاکستان کے جنوب مغربی علاقے سے اغوا کیے جانے والے دو چینی شہریوں کو ہلاک کر دیا گیا ہے۔

بیان میں چینی باشندوں کو ہدایت بھی کی گئی ہے کہ وہ پاکستان کی پولیس اور فوجی حکام کے ساتھ تعاون کریں اور کسی ہنگامی صورتِ حال میں فوراً سفارت خانے کو مطلع کریں۔

واضح رہے کہ چین کے سنکیانگ کے علاقے میں بیجنگ سے قدرے ناراض اوغر آبادی کے افغانستان اور پاکستان میں دہشتگرد تنظیموں کے ساتھ مل جانے کے حوالے سے چین کو کافی عرصے سے خدشات رہے ہیں۔

ادھر پاکستان میں بھی بلوچستان میں بعض علیحدگی پسند اور اسلامی شدت پسند تنظیمیں بیرونی ممالک کے شہریوں کو تاوان کے لیے بھی اغوا کرتی رہی ہیں جن میں چینی باشندے بھی شامل رہے ہیں۔

خیال رہے کہ پاکستانی فوج نے ان کے اغوا کے بعد بلوچستان میں مستونگ کے علاقے میں دولتِ اسلامیہ سے منسلک شدت پسندوں کے خلاف آپریشن بھی کیا تھا۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں