قصور میں مظاہرے جاری، حالات کشیدہ

قصور میں کمسن زینب کو جنسی زیادتی کے بعد قتل کرنے والے مجرم کی گرفتاری کے لیے مظاہروں کا سلسلہ جمعرات کو بھی جاری ہے

قصور میں مظاہرے

جمعرات کو مظاہروں کا آغاز زینب کی رہائش گاہ کے باہر سے ہوا

قصور میں مظاہرے

ڈنڈوں سے لیس مظاہرین نے ضلعی ہسپتال کا رخ کیا اور وہاں لگے پینر پھاڑ دیے

شہباز شریف

پنجاب کے وزیراعلیٰ شہباز شریف بھی جمعرات کو قصور پہنچے اور زینب کے اہلخانہ سے ملاقات کی

زینب کا جنازہ تصویر کے کاپی رائٹ AFP

بدھ کو زینب کے جنازے میں شہریوں کی بڑی تعداد شریک ہوئی تھی

زینب کے والد

زینب کی تدفین بدھ کی رات ان کے والدین کی سعودی عرب سے واپسی پر عمل میں لائی گئی

قصور میں مظاہرے تصویر کے کاپی رائٹ EPA

زینب کی ہلاکت کے خلاف ہونے والے مظاہروں میں قاتل کی گرفتاری کے مطالبے کے علاوہ حکومت مخالف نعرے بازی بھی ہوتی رہی

قصور میں مظاہرے تصویر کے کاپی رائٹ AFP

مظاہرین میں عام شہریوں کی بڑی تعداد شامل رہی جنھیں منتشر کرنے کے لیے پولیس نے طاقت کا استعمال کیا

قصور

زینب کی ہلاکت کے خلاف قصور کی گلی محلوں میں بھی احتجاجی پوسٹر اور بینر لگائے گئے ہیں

قصور

بدھ کو ہونے والے پرتشدد احتجاج کے بعد ضلع میں سرکاری عمارتوں کی سکیورٹی میں اضافہ کر دیا گیا ہے۔

۔

اسی بارے میں