’ہیشٹیگ بی بی زی آن بی بی سی!‘

پاکستان پیپلز پارٹی کے چئیرمین بلاول بھٹو زرداری نے بی بی سی کے پروگرام ہارڈ ٹالک میں زینب بداوی کے ساتھ بات کی تو یہ انٹرویو دیکھتے ہی دیکھتے سوشل میڈیا پر چھا سا گیا۔ انٹرویو نشر ہونے کے چند گھنٹوں کے اندر #BBZonBBC ٹوئٹر پر ٹرینڈ کرنے لگا۔

یہ بھی پڑھیے:

’مجھے کوئی جلدی نہیں، میں یہاں طویل مدت کے لیے ہوں‘

زیادہ تر لوگوں نے اس انٹرویو میں بلاول بھٹو زرداری کی پرفارمنس، ان کے پراعتماد لہجے، اور اُن کے جوابات کی تعریف کی۔

ٹوئٹر صارف شہباز زاہد جو اپنے ٹوئٹر تعارف میں خود کو بھٹو خاندان کا حمایتی قرار دیتے ہیں، انہوں نے ٹویٹ کی کہ ’ہم بلاول کو پاکستان کے اگلے رہنما کے روپ میں دیکھتے ہیں، اور امید کرتے ہیں کہ وہ پاکستان میں اوپر سے نیچے تک پائیدار تبدیلی لانے میں کامیاب ہوں گے۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ TWITTER
Image caption شہباز زاہد

اسی طرح ٹوئٹر صارف ماجد آغا نے اپنی ٹویٹ میں لکھا، ’وہ پاکستان کے واحد رہنما ہیں جو قومی اور بین الاقوامی معاملات پر ایک واضح سوچ رکھتے ہیں۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ TWITTER
Image caption ماجد آغا

جہاں ٹوئٹر پر زیادہ تر صارفین نے بلاول بھٹو زرداری کی تعریف کی، وہیں بی بی سی اردو کے فیس بک پیج پر انہیں کچھ تنقید کا بھی سامنا کرنا پڑا۔

محمد اقبال علی نے تبصرہ کیا کہ ’مسٹر بلاول آپ نے اب تک کیا کیا ہے؟ کیا آپ نے کبھی کسی عوامی عہدے پر کام کیا ہے؟ یا کسی نجی کمپنی کے لیے کام کیا ہے؟ کیا آپ پڑھائی لکھائی میں بہت اچھے ہیں؟ سائنس یا ریاضی میں ماہر ہیں؟ عوامی انتظامیہ میں طویل تجربہ ہے؟ کیا آپ یہ تک جانتے ہیں کہ حکومت کی آمدن کے ذرائع کیا ہوتے ہیں؟‘

تصویر کے کاپی رائٹ TWITTER
Image caption محمد اقبال علی

اسی بارے میں