کراچی والے گرمی سے بے حال

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

پاکستان کے سب سے بڑے شہر کراچی میں شدید گرمی کی لہر جاری ہے اور منگل کو درجہ حرارت 44 ڈگری سینٹی گریڈ تک جا پہنچا ہے۔

پاکستان کے محکمہ موسمیات کے مطابق گرمی کی یہ شدت آئندہ ہفتے بھی برقرار رہے گی اور دن کے وقت درجہ حرارت 40 سے 43 ڈگری سینٹی گریڈ کے درمیان رہنے کا امکان ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ EPA

محکمہ موسمیات اور طبی ماہرین نے گرم موسم میں ماہ رمضان کے پیش نظر شہریوں کو احتیاطی تدابیر اختیار کرنے کی ہدایات بھی جاری کی ہیں۔

کراچی میں ہیٹ سٹروک سے ہلاکتوں کے بارے میں متضاد اطلاعات ہیں۔

ایدھی حکام کا کہنا ہے کہ گذشتہ تین دنوں میں ان کے مراکز لائے جانے والی لاشوں کی تعداد عام دنوں کی نسبت کہیں زیادہ ہےتاہم شہر کے سرکاری ہسپتالوں نے ہیٹ سٹروک سے کسی شخص کی ہلاکت کی تصدیق نہیں کی ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

خبررساں ادارے اے ایف پی کے مطابق کراچی کے میئر وسیم اختر نے شہریوں کو دن کے وقت ہیٹ سٹروک سے بچاؤ کے لیے سایہ دار جگہوں پر رہنے کی ہدایت کی ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

اس کے علاوہ ہزاروں کی تعداد ملازمت اور دیگر امور کے سلسلے پر گھروں سے باہر رہتے ہیں اور عوامی مقامات اور گلیوں میں پانی سے خود کو تسکین پہنچاتے دکھائی دیتے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

خیال رہے کہ تقریبا ڈیڑھ کروڑ آبادی والی شہر میں بجلی کی لوڈ شیڈنگ نے شہریوں کے مسائل میں مزید اضافہ کر دیا ہے جبکہ ماہرین کے مطابق درختوں کی کٹائی سے بھی درجہ حرارت میں اضافہ ہوا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

دوسری جانب بے گھر افراد اور محنت مزدوری کرنے والا طبقہ گرم موسم سے سب سے زیادہ متاثر ہوا ہے جنھیں سایہ دار جگہیں اور پینے کی صاف پانی کی سہولت کے فقدان کا سامنا بھی ہے۔

خیال رہے کہ جون 2015 میں کراچی سمیت سندھ کے جنوبی علاقوں میں آنے والے گرم موسم کی لہر سے تقریباً 1200 افراد کی ہلاکت ہوئی تھی۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

اسی بارے میں