’ووٹ کے لیے باہر نکلنا کوئی گناہ نہیں ہے‘
اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

الیکشن 2018: ’اگر خواتین کے پردے اور عزت کا خیال رکھا جائے تو کسی کو کوئی اعتراض نہیں‘

پاکستان کے صوبے خیبر پختونخواہ کی تحصیل دِیر بالا‎ وہ علاقہ ہے جہاں ماضی میں انتخابات میں خواتین کو انتخابی عمل میں حصہ لینے کی اجازت نہیں دی جاتی تھی، لیکن اس بار یہاں سے دو خواتین بھی انتخابات میں بطور امیدوار حصہ لے رہی ہیں۔ حمیدہ شاہد ان میں سے ایک ہیں۔

مذہبی سیاسی جماعتوں کا اہم گڑھ سمجھے جانے والے اس علاقے میں خواتین تقریبا چار دہائیوں کے بعد عام انتخابات میں اپنا ووٹ ڈالیں گی۔ ہار جیت سے قطع نظر، اس علاقے کی تاریخ میں اسے ایک اہم موڑ قرار دیا جا رہا ہے جب یہاں کی نمائندگی وہ عورت کر رہی ہے جسے چند برس پہلے تک ووٹ ڈالنے کی اجازت بھی نہیں تھی۔

بی بی سی کی نمائندہ فرحت جاوید نے 25 جولائی کے عام انتخابات میں حصہ لینے والی غیر معمولی خواتین سے انٹرویوز کے خصوصی سلسلے میں حمیدہ شاہد سے بات کی اور ان سے پوچھا کہ وہ دِیر میں کیا تبدیلی لانا چاہتی ہیں۔