جب کلثوم نواز کی گاڑی کو کرین سے ہٹایا گیا!
اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

جب کلثوم نواز کی گاڑی کو کرین سے ہٹایا گیا!

سنہ 1999 میں جب پرویز مشرف نے نواز شریف کی حکومت کا تختہ الٹا تو پارٹی کی قیادت بھی بکھر گئی۔ زیادہ تر لیگی رہنما نظر بند تھے اور نواز شریف خود اٹک قلعے میں قید تھے۔ ایسے میں کلثوم نواز نے پارٹی کی باگ ڈور سنبھالی اور اپنے میاں کی رہائی کے لیے 8 جون 2000 کو لاہور سے اسلام آباد کی طرف مارچ کرنے کا پروگرام بنایا۔

مشرف حکومت نے انھیں ناکام بنانے کی حتیٰ الامکان کوشش کی اور لاہور کی مشہور کینال روڈ پر گھنٹوں ان کی گاڑی کا راستہ روک کر رکھا۔ اس وقت پاکستان میں میڈیا اتنا پھیلا نہیں تھا اور چند ہی صحافیوں نے یہ منظر اپنی آنکھوں سے دیکھا۔

نعیم عباس تب غیر ملکی خبر رساں ادارے روئٹرز کے لیے کیمرہ مین کے طور پر کام کرتے تھے اور انھوں نے وہ مناظر فلمبند کیے جو دنیا بھر کے ٹی وی چینلز پر نشر ہوئے۔

انھوں نے اس روز کیا دیکھا؟ جانیے اس ڈیجیٹل ویڈیو میں۔