عمران خان: پاکستانی قوم کے لیے مودی کا نیک خواہشات کا پیغام

نریندر مودی تصویر کے کاپی رائٹ SAM PANTHAKY/AFP/Getty Images

پاکستان کے وزیرِ اعظم عمران خان نے ایک ٹوئٹر پیغام میں کہا ہے کہ یوم پاکستان کے موقع پر انڈیا کے وزیر اعظم نریندر مودی نے پاکستانی قوم کے لیے خیر سگالی کا پیغام بھیجا ہے۔

ایک ٹویٹ میں وزیرِ اعظم عمران خان نے لکھا کے انہیں نریندر مودی کا پیغام ملا ہے کہ ’میں پاکستان کے قومی دن کے موقع پر پاکستان کے عوام کو نیک خواہشات اور مبارکباد دیتا ہو۔‘

عمران خان کے بقول مودی کے پیغام میں مزید کہا گیا کہ ’اب وقت آ گیا ہے کہ بر صغیر کے لوگ دہشت اور تشدد سے پاک ماحول میں مل کر جمہوریت، امن، ترقی اور مستحکم خطے کے لیے کام کریں۔`

یہ بھی پڑھیے

بازی عمران خان نے جیتی یا نریندر مودی نے؟

’بات بگڑی تو نہ میرے ہاتھ میں رہے گی اور نہ مودی کے‘

’مذاکرات سے تنازعات کا حل، تجارت عوام کی زندگیوں میں بہتری کا آسان نسخہ‘

پاکستان کے وزیرِ اعظم کی جانب سے انڈین وزیرِ اعظنم کا پیغام شئیر کرنے پر ٹوئٹر صارفین نے حیرت اور خوشی کا اظہار کیا ہے۔

کئی لوگوں کے خیال میں عمران خان کی پالیسیوں کی وجہ سے نریندر مودی کو بلآخر گھٹنے ٹیکنے پڑے اور وہ پر امن انداز میں بات کر ہے ہیں۔ وہیں کئی لوگ اس بات پر غیر یقینی کا اظہار بھی کر رہے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ TWITTER

کئی لوگوں کے خیال میں مودی کا یہ پیغام دیانت داری پر مبنی نہیں ہے اور کئی اسے ایک اور انتخابی حربہ قرار دے رہے ہیں۔

ایک ٹوئٹر صارف نجدہ نے عمران خان کی ٹویٹ کے جواب میں لکھا ’چلیں اس نیک خواہشات کو قبول کر لیں اور انسانیت اور امن کے لیے دعاگو ہوں۔`

جبکہ ابو صارم کا خیال تھا کہ ’آب آیا اونٹ پہاڑ کے نیچے۔‘

کچھ ٹوئٹر ہینڈل سے، جن میں گبر اور ساجد سنی شامل ہیں، شک کا اظہار کرتے ہوئے مودی کے پیغام کا سکرین شاٹ دکھانے کی فرمائش کی گئی۔

ایک صارف راحیل خان نے خبر دار کیا کہ ’خیال رہے جبکہ پچھلی بار مودی کی جانب سے ایسا ہی پیغام آیا تو بالاک کوٹ والا حملہ کیا گیا اور ہمارے درخت قتل کیے گئے۔‘

فہد امازئی نے لکھا’ اچھی بات ھے بس کاش یہ بات ہم مودی اکاؤنٹ سے دیکھتے تو زیادہ اچھا ہوتا نہ آپ کو مودی کی ترجمانی کرنی پڑتی لیکن اچھا ہوا کم ازکم مودی نے آپ کی کال نہ آٹھانے کے بعد آپکو پیغام تو بھیجا۔‘

عمران ایوب نامی صارف بھی انڈین وزیرِ اعظم کے پیغام پر کچھ خاص مطمئن نظر نہیں آئے۔

ان کا کہنا تھا ’نہیں اس آدمی کا کوئی بھروسہ نہیں جو اپنے ملک کے فوجی مروا سکتا ہو الیکشن کے لیے اُس سے کوئی خیر کی توقع نہیں‘۔

ابرار رسول کے بقول یہ نریندر مودی کا ’الیکشن سٹنٹ ہے۔‘

اسی بارے میں