فواد عالم کے نام سے ٹرینڈ: ’کتنی بےشرمی کی بات ہے، پی سی بی فوری ایکشن لے‘

کرکٹ تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption فواد عالم کے مداحوں نے کرکٹ بورڈ کے رویے سے تنگ آ کر #FawadAlamExposed کا ہیش ٹیگ استعمال کرتے ہوئے ان کی صلاحیتوں کے گن گانے شروع کر دیے ہیں

چند روز قبل پاکستانی سوشل میڈیا پر پاکستانی کرکٹر امام الحق کا خوب ذکر چل رہا تھا جہاں ان کے ذاتی نوعیت کے مبینہ واٹس ایپ پیغامات کے سکرین شاٹس شائع کیے گئے تھے جو انھوں نے مختلف خواتین کو بھیجے تھے۔

ان پیغامات کے بعد امام الحق کو کافی تنقید کا نشانہ بنایا گیا اور مسلسل ٹوئٹر پر ان کا نام ٹاپ ٹرینڈز میں شامل رہا۔

لیکن اس کے کچھ دیر بعد سوشل میڈیا پر ہی یہ ذکر چھڑا کہ امام الحق کے بعد اور بھی کئی پاکستانی کرکٹرز کا نام اسی حوالے سے سامنے آئے گا۔

جب گذشتہ شب فواد عالم کے نام سے #FawadAlamExposed کا ہیش ٹیگ تیزی سے ٹرینڈ کرنا شروع ہوا تو کئی لوگ شش و پنج میں پڑ گئے کہ ایک کھلاڑی جو گذشتہ چار سالوں سے قومی ٹیم کا حصہ نہیں بنا اس نے ایسا کیا کر دیا جس پر ان کے 'راز' سب کے سامنے لائے جا رہے ہیں۔

فواد عالم کے بارے میں مزید پڑھیے

انضی بھائی! میری جوانی لوٹا دیں

’وہاب ریاض، فواد عالم اور یہ کرم کے فیصلے‘

انضمام صاحب! آپ کا ’اینگری ینگ پاکستان‘ فلاپ ہو گیا

فاتح محمد نے ٹویٹ کیا 'ڈیئر پی سی بی، پلیز ایکسپوز فواد عالم'۔

لیکن جب اس ہیش ٹیگ ٹرینڈ کا جائزہ لیا گیا تو پتہ چلا کہ رات ساڑھے نو بجے شروع ہونے والے ٹرینڈ کو شروع کرنے والے لوگ فواد عالم کے اپنے حمایتی تھے۔

یہ حکمت عملی نہایت کامیاب رہی اور انھوں نے ایسا ٹرینڈ کامیابی سے شروع کیا جسے دیکھ کر آپ کلک کرنے پر مجبور ہو جائیں۔

صارف ارسلان احمد کی ٹویٹ کی ہی مثال لیں۔ وہ لکھتے ہیں 'یہ اتنی بےشرمی کی بات ہے، میں یہ توقع نہیں کر رہا تھا فواد عالم سے۔ یہ لیک ہونے والی تصویر دیکھیں، پی سی بی کو ان کے خلاف فوری ایکشن لینا چاہیے۔'

اور اس ٹویٹ میں تصویر کیا تھی؟ فواد عالم کے کریئر کے اعداد و شمار جن کو دیکھ کر واقعی ذہن میں سوال اٹھتا ہے کہ ایک ایسی ٹیم جسے مصباح الحق اور یونس خان کے ریٹائر ہونے کے بعد منجھے ہوئے بیٹسمین کی ضرورت ہو، وہ فواد عالم کو کیوں نہیں کھلا رہی۔

کئی صارفین نے اس ٹرینڈ کو امام الحق خلاف اشارہ سمجھتے ہوئے ٹویٹ میں کہا کہ ’اگر آپ کسی کے راز سامنے لانا چاہتے ہیں تو فواد جیسے لوگوں کو سامنے لائیں۔ اتنے عمدہ کھلاڑی جنھیں پی سی بی نظر انداز کرتا ہے۔‘

امام الحق کے چچا اور حال ہی میں ورلڈ کپ کے بعد پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیف سلیکٹر کے عہدے سے مستعفی ہونے والے انضمام الحق نے گذشتہ سال اپریل میں فواد عالم کو مسلسل نظر انداز کیے جانے پر تبصرہ کیا تھا کہ گذشتہ تین چار سالوں میں فواد عالم کے مقابلے میں کئی اور کھلاڑیوں نے بہتر کھیل پیش کیا تھا اور اس وجہ سے ان کو موقع نہیں ملا۔

لیکن اگر اعداد و شمار دیکھے جائیں تو معلوم ہوتا ہے کہ 2014-15 کے سیزن میں فواد نے 72 کی اوسط سے 710 رنز بنائے۔ اس کے بعد 2015-16 کے سیزن میں انھوں نے 56 کی اوسط سے 672 رنز بنائے۔

2016-17 کے سیزن میں انھوں نے 55 کی اوسط سے 499 اور 2017-18 کے سیزن میں 40 کی اوسط سے 570 رنز سکور کیے۔

اور یہاں پر سب سے اہم نکتہ اجاگر کرنے کی ضرورت یہ ہے کہ اعداد و شمار کی روشنی میں پاکستان کی فرسٹ کلاس کرکٹ کی تاریخ میں فواد عالم سے زیادہ کامیاب بلے باز کوئی نہیں ہے۔

سنہ 2003 میں ڈیبو کرنے والے 33 سالہ فواد عالم نے تین ٹیسٹ سمیت اب تک 155 میچ کھیلے ہیں جن میں انھوں نے 56 رنز کی اوسط سے 11 ہزار سے زیادہ رنز سکور کیے ہیں اور ان کا سب سے زیادہ انفرادی سکور 296 رنز ہے۔

سنہ 2009 میں سری لنکا کے خلاف اپنا ٹیسٹ ڈیبو کرنے پر فواد عالم نے 168 رنز کی شاندار اننگز بھی کھیلی تھی۔ لیکن ان کی بدقسمی رہی کہ 2016 میں انگلینڈ کا دورہ کرنے والے سکواڈ کا حصہ بننے والے فواد کوئی میچ نہ کھیل سکے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

انھوں نے آخری مرتبہ 2015 پاکستان کی نمائندگی کی تھی جب انھیں بنگلہ دیش کے خلاف ایک روزہ ٹیم میں شامل کیا تھا۔

ماضی میں ٹی 20 کی ٹیم میں کھیلنے والے فواد نے 2010 میں آخری دفعہ اس فارمیٹ میں پاکستان کے لیے کھیلا تھا اور اس سے ایک برس قبل نیوزی لینڈ کے خلاف انھوں نے اپنا تیسرا اور آخری ٹیسٹ میچ کھیلا تھا۔

اسی بارے میں