خودکش حملہ کفر ہے، طاہرالقادری کا فتویٰ

  • عبادالحق
  • بی بی سی اردو ڈاٹ کام لاہور
،تصویر کا کیپشن

دہشت گرد اسلام اور پاکستان دشمن قوتوں کےآلہ کار بنے ہوئے ہیں: ڈاکٹر طاہر القادری

پاکستان عوامی تحریک اور تحریک منہاج القرآن کے سربراہ ڈاکٹر طاہرالقادری نے فتویٰ دیا ہے کہ خودکش حملے اور بم دھماکے غیر اسلامی اور کفر ہے۔

ایک سو پچاس صفحات پر مشتمل پر اپنے فتویْ میں انہوں نے کہا ہے کہ خودکش حملے اسلام میں جائز نہیں ہیں بلکہ یہ کفر ہے۔ بے گناہ شہریوں کا قتل اور دہشت گردی اسلام کے اصولوں سے انحراف ہے جب کہ اسلامی ریاست کے خلاف مسلح جدوجہد بغاوت کے زمرے میں آتی ہے۔

انہوں نے قرآن اور احادیث کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ اسلام میں کہیں بھی خودکش حملوں اور دہشت گردی کا ذکر نہیں ہے اور جو ایسا کر رہا ہے وہ لوگ اسلام سے بغاوت کر رہے ہیں۔ان کے بقول جو لوگ حکومتی رٹ کو چیلنج کر رہے ہیں ان کے خلاف کارروائی ضروری ہے۔

ان کا کہنا ہے دہشت گرد اسلام اور پاکستان دشمن قوتوں کےآلہ کار بنے ہوئے ہیں اور ان کی وجہ سے دنیا میں مسلمانوں اور پاکستان کی بدنامی ہو رہی ہے۔ڈاکٹر طاہر القادری نے کہا کہ اسلام دہشت گردی کی اجازت نہیں دیتا اور دہشت گردی کا شکار ہونے والے فوجی اور شہری شہید ہیں۔

ان کے بقول فتویْ کا انگریزی، عربی اور فارسی سمیت دیگر اہم زبابوں میں بھی ترجمہ کیا جا رہا ہے۔

خیال رہے کہ رواں سال اپریل میں پنجاب حکومت نے دہشت گردی کے خلاف ایک اشتہاری مہم کا آغاز کیا تھا اور اس ضمن میں قومی اخبارات میں علماء کا ایک مشترکہ اعلامیہ سرکاری اشتہار کی شکل میں شائع کرایا تھا جس میں خودکش حملوں کو حرام قرار دیا گیا تھا۔