لاہور ہائیکورٹ کے نئے جج کون؟

  • عباد الحق
  • بی بی سی اردو ڈاٹ کام، لاہور
لاہور ہائی کورٹ
،تصویر کا کیپشن

چار جوڈیشل افسروں کو بھی ہائی کورٹ کا جج مقرر کیا گیا ہے

حکومت اور عدلیہ کے درمیان حالیہ کشیدگی ختم ہونے کے بعد صدرِ پاکستان آصف علی زرداری نے لاہور ہائی کورٹ میں جن بائیس نئے ایڈیشنل ججوں کا تقرر کیا ہے ان میں وکیل رہنماؤں کے ساتھی یا جونیر اور ججوں کے رشتہ دار بھی شامل ہیں۔

وزیراعظم یوسف رضا گیلانی کی چیف جسٹس پاکستان جسٹس افتخار محمد چودھری سے ملاقات کے بعد وزارت قانون نے لاہور ہائی کورٹ میں ججوں کی خالی اسامیاں پر کرنے کے لیے نئے ججوں کا تقرر کیا ہے جو کل انیس فروری کو اپنے عہدے کا حلف اٹھائیں گے۔

لاہور ہائی کورٹ کے نئے ججوں میں سپریم کورٹ بار ایسوسی ایشن کے سابق سیکرٹری شوکت عمر پیرزادہ اور پنجاب بارکونسل کے سابق چیئرمین ایگزیکٹو کمیٹی حسن رضا پاشا بھی شامل ہیں۔ شوکت عمر پیرزادہ کا تعلق پیپلز پارٹی سے ہے اور وہ عدلیہ بحالی تحریک کے دوران سپریم کورٹ بار ایسوسی ایشن کے صدر علی احمد کرد کے ساتھ بار کے سیکرٹری منتخب ہوئے تھے۔

پنجاب بارکونسل کے جن ارکان کو لاہور ہائی کورٹ کا ایڈیشنل جج مقرر کیا گیا ہے ان میں چکوال سے حسن رضا پاشا، بہاولپور سے اعجاز احمد، جہلم سے انوارالحق اور راولپنڈی سے چودھری محمد طارق شامل ہیں۔

نئے ججوں میں سپریم کورٹ کے ایڈہاک جج جسٹس خلیل الرحمن رمدے کے برادرِ نسبتی یاور علی خان بھی شامل ہیں جو سابق چیف جسٹس پاکستان جسٹس یعقوب علی خان کے بیٹے ہیں جبکہ چودھری شاہد سعید، جسٹس خلیل رمدے کے بھائی اور سابق اٹارنی جنرل پاکستان چودھری محمد فاروق کے جونیئر ہیں۔نئے ججوں میں شاہد حمید ڈار، چیف جسٹس لاہورہائی کورٹ جسٹس خواجہ محمد شریف کے عزیز ہیں۔

نئے ججوں میں وقار حسن میر جسٹس خواجہ محمد شریف کے جونیئر ہیں جبکہ میاں شاہد اقبال کی بھی وابستگی جسٹس خواجہ شریف سے ہے۔

مامون رشید شیخ سپریم کورٹ کے سابق جج جسٹس اے آر شیخ کے بیٹے اور جانے مانے قانون دان اے کے ڈوگر کے داماد ہیں۔انور بوہر سابق ڈسٹرکٹ و سیشن جج کاظم بوہر کے بیٹے ہیں۔ مظہر اقبال سندھو پیپلز پارٹی کے رہنما اور پراسیکیواٹر جنرل پنجاب سید زاہد حسین بخاری کے جونیئر رہے ہیں ۔ فرخ عرفان خان کمپنی قوانین کے ماہر جانے جاتے ہیں اور ان کی وابستگی وکیل رہنما حامد خان گروپ سے ہے۔

نئے ججوں میں چار جوڈیشل افسروں کو ہائی کورٹ کا جج مقرر کیا گیا ہے ان میں رؤف احمد شیخ، شیخ احمد فاروق، نسیم اختر اور سید اخلاق احمد شامل ہیں۔ان جوڈیشل افسروں میں شیخ احمد فاروق اور نسیم اختر ریٹائر ہوچکے ہیں اور پہلی مرتبہ ریٹائرد جوڈیشل افسروں کو ہائی کورٹ کا جج مقرر کیا گیا ہے۔

دیگر ججوں میں خالد محمود ،سید مظہر علی اکبر نقوی، سردار شمیم خان اور قاسم خان شامل ہیں۔