لاہور: دھماکہ خیز مواد کی بھاری مقدار برآمد

پنجاب کے صوبائی دارالحکومت لاہور کی پولیس نے بھاری مقدار میں دھماکہ خیز مواد برآمد کرکے اسے ناکارہ بنادیا ہے جبکہ ایک شخص کو حراست میں لے کر اس سے تحقیقات شروع کردیں ہیں۔

لاہور
Image caption لاہور میں خود کش حملوں کے بعد مسلسل چھ دھماکے ہوئے۔

یہ مواد لاہور کے رہائشی علاقے اقبال ٹاؤن سے ملا ہے جہاں جمعہ کی شب یکے بعد دیگرے چھ دھماکے ہوئے تھے۔

پولیس آفیسر علی ناصر رضوی نے میڈیا کو بتایاکہ دھماکہ خیز مواد اقبال ٹاؤن کے علاقے مہران بلاک کی ایک دکان سے برآمد ہوا ہے اور بقول ان کے دھماکہ خیز مواد کی مقداد پندرہ سو کلو گرام سے زیادہ ہے۔ انہوں نے بتایا کہ دھماکہ خیز مواد سے بھری ساٹھ بوریاں کے علاوہ دو جیکٹس، ہینڈ گرینڈز ، گولیاں اور دیگر مواد شامل ہے۔

پولیس آفیسر کے مطابق جو دھماکہ خیز مواد ملا ہے وہ بالکل تیار تھا اس لیے یہ کہیں کبھی بھی استعمال کیا جاسکتا تھا جس سے بڑی تباہی ہو سکتی تھی۔

انہوں نے بتایا کہ پولیس کو یہ اطلاع ملی کہ علاقے کی ایک دکان بند ہے جس میں مشکوک سامان پڑا ہے اور یہ اطلاع ملنے کے بعد پولیس نے فوری طور پر کارروائی کی ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ دکان سے ملنے والے مواد خودکش جیکٹ، کم شدت کے کریکرز اور بم دھماکے کے لیے استعمال کیا جاسکتا ہے۔

ایس پی علی ناصر رضوی نے بتایا کہ جس دکان سے یہ مواد برآمد ہوا ہے وہ کرائے پر دی گئی تھی اور پولیس نے دکان کے مالک کو حراست میں لے کر اس کی تحقیقات شروع کردی ہیں۔

پولیس آفیسرکا کہنا ہے کہ کم شدت کے دھماکوں کے بعد اقبال ٹاؤن میں ایک بڑا سرچ آپریشن کیا گیا اور یوں لگتا ہے کہ اس دکان میں رہنے والے حال ہی میں یہاں سے بھاگے ہیں۔

ان کے بقول پولیس کو اس جگہ سے مزید سراغ بھی ملے ہیں جو لوگ یہاں سے بھاگے ہیں وہ پولیس سے زیادہ دور نہیں ہیں۔ ایک سوال پر پولیس آفیسر علی ناصر رضوی نے بتایا کہ ابھی یہ شناخت نہیں ہوسکی کہ ملنے والا مواد کس ملک کا بنا ہوا ہے۔

اسی بارے میں