سردار مہتاب عباسی کا استعفیٰ مسترد

پاکستان مسلم لیگ نون کے رکنِ قومی اسمبلی سردار مہتاب احمد خان عباسی نے خبیر پختونخواہ کے نام کی منظوری کے خلاف اپنی نشست سے مستعفی ہو گئے ہیں اور اپنا استعفیٰ پارٹی قائد نواز شریف کو بجھوادیا ہے۔

فائل فوٹو
Image caption سردار مہتاب عباسی کے استعفیٰ کی منظوری کے بارے میں فیصلہ پارٹی کی اعلیٰ قیادت کرے گی

تاہم میاں نواز شریف نے ان کا استعفیٰ منظور نہیں کیا ہے۔

سینیٹر پرویز رشید نے بتایا کہ نواز لیگ کے قائد نے مہتاب احمد خان عباسی کا استعفیٰ منظور نہیں کیا ہے۔

اس سے قبل پاکستان مسلم لیگ نون کے ترجمان صدیق الفاروق نے سردار مہتاب عباسی کے مستعفی ہونے کی تصدیق کی ہے اور بتایا کہ انہوں نے ہزارہ کے عوام کے جذبات اور وہاں ہونے والی ہلاکتوں کے پیشِ نظر قومی اسمبلی کی رکنیت سے استعفیٰٰ دیا ہے۔

لاہور سے ہمارے نامہ نگار عباد الحق نے بتایا کہ سردار مہتاب عباسی سنہ دو ہزار آٹھ کے انتخابات میں ایبٹ آباد کی نشست سے مسلم لیگ نون کے ٹکٹ پر منتخب ہوئے تھے اور نواز شریف کے دورِ حکومت میں سردارمہتاب صوبہ سرحد کے وزیرِ اعلیْ بھی رہ چکے ہیں۔

صدیق الفاروق کے بقول سردار مہتاب عباسی کا کہنا ہے کہ وہ عام انتخابات میں مسلم لیگ نون کے ٹکٹ پر رکنِ اسمبلی منتخب ہوئے تھے اس لیے یہ نشست مسلم لیگ نون کی امانت تھی اور وہ اپنا استعفیْٰ براہِ راست سپیکر قومی اسمبلی کو بھجوانے کی بجائے اپنی قیادت کو بھیج رہے ہیں تاکہ اِسے سپیکر قومی اسمبلی کو بجھوایا جاسکے۔

سردار مہتاب عباسی کے استعفیٰ کی منظوری کے بارے میں صدیق الفاروق کا کہنا ہے کہ اس بارے میں فیصلہ پارٹی کی اعلیٰ قیادت کرے گی۔

اسی بارے میں