فوجی قافلے پر حملہ، کپتان سمیت سات ہلاک

پاکستان کے فوجی حکام کا کہنا ہے کہ قبائلی علاقے شمالی وزیرستان میں ایک فوجی قافلے پر شدت پسندوں کے حملے میں ایک کپتان سمیت سات فوجی ہلاک ہوگئے ہیں۔

فوج کے شعبۂ تعلقاتِ عامہ کے سربراہ میجر جنرل اطہر عباس نے بی بی سی اردو کو بتایا ہے کہ یہ واقعہ جمعہ کو شمالی وزیرستان میں بویہ کے مقام پر پیش آیا۔

فوجی ترجمان کا کہنا تھا کہ اس قافلے میں ساٹھ سے ستر فوجی شامل تھے جو میران شاہ سے دتہ خیل جا رہے تھے۔

انہوں نے بتایا کہ شدت پسندوں نے بویہ کے قریب گھات لگا کر قافلے پر حملہ کیا جس میں ایک کپتان، ایک جے سی او اور پانچ جوان ہلاک ہوگئے۔

فوجی حکام کے مطابق اس حملے میں سولہ فوجی اہلکار زخمی بھی ہوئے ہیں جن میں سے دو کی حالت نازک ہے۔ فوجی ترجمان کا کہنا تھا کہ ہلاک شدگان کی لاشوں اور زخمیوں کو محفوظ مقام پر پہنچا دیا گیا ہے جہاں زخمیوں کا علاج جاری ہے۔

ادھر طالبان کی جانب سے جمعہ کو جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ یہ حملہ جمعرات کو پاکستانی فوج کی مبینہ فائرنگ سے ایک بچے کی ہلاکت کے جواب میں کیا گیا ہے اور اس حملے میں فوج کو بھاری جانی و مالی نقصان اٹھانا پڑا ہے۔

بیان کے مطابق اس حملے میں گیارہ فوجی ہلاک ہوئے ہیں جبکہ چار فوجی گاڑیاں مکمل طور پر جبکہ ایک جزوی طور پر تباہ ہوئی ہے۔

اسی بارے میں