بینظیر قتل:’تحقیقات کا دائرہ وسیع ہوگا‘

فائل فوٹو
Image caption بینظیر بھٹو کو سال دو ہزار سات میں راولپنڈی کے لیاقت باغ میں ایک خودکش حملے میں قتل کیا گیا تھا

پاکستان پیپلز پارٹی کی کور کمیٹی کے اجلاس میں سابق وزیرِاعظم بے نظیر بھٹو کے قتل کی تحقیقات آگے بڑھانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

پیر کو رات گئے اسلام آباد میں منعقدہ یہ اجلاس صدر آصف علی زرداری اور وزیراعظم یوسف رضا گیلانی کی سربراہی میں منعقد ہوا اور اس میں تحقیقات کا دائرہ وسیع کر کے قتل کی اس سازش میں ملوث عناصر کو بے نقاب کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔

اجلاس کے بارے میں صدر کے ترجمان فرحت اللہ بابر نے صحافیوں کو بتایا ہے کہ قتل کی تحقیقات اقوام متحدہ کے کمیشن کی رپورٹ کے تناظر میں کی جائے گی۔

وفاقی وزیرِ داخلہ رحمان ملک نے اجلاس کو بینظیر قتل کی تحقیقات کرنے کے لیے وزیر اعظم کی جانب سے قائم کی گئی فیکٹ فائنڈنگ کمیٹی کی پیش رفت کے بارے میں بتایا۔ ان کا کہنا تھا کہ کمیٹی مزید افراد سے پوچھ گچھ کے بعد وزیراعظم کو اپنی رپورٹ پیش کرے گی۔

اس سے پہلے پیر کے روز قومی اسمبلی کے اجلاس میں وزیر اعظم یوسف رصا گیلانی نے اپنے خطاب میں کہا تھا کہ بے نظیر بھٹو کے قتل میں ملوث افراد سزا سے بچ نہیں سکتے۔

اسی بارے میں