ہنگو پولیس پر حملہ: دو حملہ آور ہلاک

پاکستان کے صوبہ خیبر پختون خوا کے ضلع ہنگو میں پولیس پر ہونے والے حملے میں ایک پولیس اہلکار ہلاک اور دو زخمی ہوگئے ہیں۔ جبکہ جوابی کاروائی میں دو حملہ آور بھی مارے گئے ہیں۔

ہنگو پولیس
Image caption جوابی کاروائی میں دو حملہ آور بھی ہلاک ہوئے ہیں

پولیس کے مطابق یہ واقعہ جمعرات کی صبح ہنگو شہر سے تقریباً تیس کلومیٹر دور ماموں خوڑ میں سروخیل سڑک پر اس وقت پیش آیا جب پولیس کی ایک گشتی وین دو نامعلوم موٹر سائیکل سواروں نے فائرنگ شروع کردی۔

دوابہ پولیس سٹیشن کے ایک اہلکار خیال زمان نے بی بی سی کو بتایا کہ فائرنگ سے ایک پولیس اہلکار ہلاک جبکہ دو زخمی ہوئے ہیں۔ انہوں نےبتایا کہ پولیس نے جوابی کاروائی کی جس میں دونوں حملہ آوار مارے گئے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ پولیس نے حملہ آواروں کی لاشیں اپنے تحویل میں لے لی ہے۔ زخمی اہلکاروں کو قریبی ہسپتال میں منتقل کر دیا گیا ہے۔ تاہم فوری طورپر اس واقعہ کی وجہ معلوم نہیں ہوسکی اور نہ ہی کسی تنظیم نے اس کی ذمہ داری قبول کی ہے۔

خیال رہے کہ ہنگو میں گزشتہ کچھ عرصہ سے پولیس اور سرکاری اہلکاروں پر حملوں اور ان کے اغواء کی وارداتوں میں اضافہ ہوا ہے۔یہ واقعات ایسے وقت پیش آرہے ہیں جب ہنگو سے ملحقہ اورکزئی ایجنسی میں سکیورٹی فورسز کی طرف سے شدت پسند تنظیموں کے خلاف گزشتہ دو ماہ سے آپریشن کا سلسلہ جاری ہے۔

آپریشن کی وجہ سے ہنگو اور آس پاس کے علاقوں میں سکیورٹی سخت کردی گئی ہے تاہم اس کے باوجود ان وارداتوں میں کمی کے کوئی اثار دکھائی نہیں دے رہے ۔

یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ ضلع ہنگو کے حدود تین قبائلی ایجنسیوں اورکزئی، شمالی وزیرستان اور کرم ایجنسی سے ملی ہوئی ہے۔

اسی بارے میں